Sunday , September 24 2017
Home / ہندوستان / ممبئی سلسلہ وار بم دھماکوں کا مقدمہ سات ملزمین کے خلاف قطعی مباحث کی سماعت شروع

ممبئی سلسلہ وار بم دھماکوں کا مقدمہ سات ملزمین کے خلاف قطعی مباحث کی سماعت شروع

ممبئی 7 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک خصوصی ٹاڈا عدالت نے آج 1993 کے سلسلہ وار ممبئی دھماکوں کے مقدمہ میں قطعی مباحث کی سماعت کا آج آغاز کیا ۔ یہ سماعت سات ملزمین کے خلاف ہو رہی ہے جن میں ہندوستان لایا گیا گینگسٹر ابو سالم بھی شامل ہے ۔ خصوصی پبلک پراسکیوٹر دیپک سلوی نے کہا کہ عدالت نے قطعی مباحث کی سماعت کا آج سے آغاز کردیا ہے ۔ اس کیس میں ابو سالم کے علاوہ مصفی دوسہ ‘ کریم اللہ خان ‘ فیروز عبدالرشید خان ‘ ریاض صدیقی ‘ طاہر مرچنت اور عبدالقیوم شامل ہیں۔ ان پر خصوصی جج جی اے سانپ کی عدالت میں مقدمہ چل رہا ہے ۔ خصوصی عدالت نے ماہ اگسٹ میں فوجداری تعزیرات کے دفعہ 313 کے تحت ملزمین کے بیانات کے قلمبند کرنے کا عمل مکمک کرلیا تھا جس کے تحت ملزمین کو ان حالات کی وضاحت کرنے کا موقع دیا جاتا ہے جو ان کے خلاف شواہد کی پیشکشی سے پیدا ہوتے ہیں۔ بعد ازاں عدالت نے ملزمین کے مقرر کردہ وکیل صفائی کے بیانات بھی قلمبند کئے تھے ۔ ممبئی میں 12 مارچ 1993 کو 13 طیاقتور بم دھماکے ہوئے تھے جن میں 257 افراد ہلاک اور 713 افراد زخمی ہوئے تھے ۔ ان دھماکوں کے مقدمہ میں ٹاڈا عدالت کی جانب سے 2006 میں 100 افراد کو خاطی قرار دیا گیا تھا ۔ تاہم سات ملزمین کے مقدمہ کو ان ملزمین سے علیحدہ کردیا گیا تھا کیونکہ ان کی گرفتاری مقدمہ کے اختتام کے وقت عمل میں آئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT