Monday , June 26 2017
Home / Top Stories / ممتا بنرجی حکومت کے خلاف احتجاج

ممتا بنرجی حکومت کے خلاف احتجاج

کئی مقامات پر جھڑپیں ، تشدد کے واقعات ، بیشمار زخمی
کولکتہ ۔22 مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ترنمول کانگریس حکومت کی پالیسیوں کے خلاف کولکتہ اور پڑوسی ہوڑہ میں مختلف مقامات پر احتجاجی مارچ کے دوران ہوئی جھڑپوں میں 100 سے زائد بائیں بازو کارکن اور 79 پولیس عملہ زخمی ہوگئے ۔ دونوں شہروں میں 217 افراد بشمول بائیں بازو کے 11 ارکان اسمبلی کو گرفتار کرلیا گیا اور سکریٹریٹ کے اطراف امتناعی احکام کی خلاف ورزی پر بڑے پیمانے پر کارروائی کی گئی ۔ پولیس نے بائیں بازو کارکنوں پر اُس وقت آنسو گیس کے شل چھوڑے جب وہ مبینہ طورپر رکاوٹوں کو توڑنے کی کوشش کررہے تھے اور اُنھوں نے سکیورٹی عملے پر حملہ کیا ۔ اس تشدد کے بعد حکمراں ترنمول کانگریس اور بائیں بازو میں لفظی جنگ شروع ہوگئی ہے ۔ بائیں بازو نے کہاکہ چیف منسٹر ممتا بنرجی کی ہدایت پر پولیس نے یہ کارروائی انجام دی اور کل یوم احتجاج منانے کا اعلان کیا ۔ ترنمول کانگریس سکریٹری جنرل پارتھا چٹرجی نے بائیں بازو کے احتجاج کو ایک ڈرامہ قرار دیا اور کہا کہ یہ سی پی آئی ایم کی ایک کوشش ہے جو اس وقت صرف علامتی جماعت بن کر رہ گئی ہے ۔ چیف منسٹر ممتا بنرجی آج سکریٹریٹ میں موجود نہیں تھی کیونکہ وہ ایک اجلاس کے سلسلے میں بربھوم ضلع میں تھیں۔ سی پی آئی ایم نے آج کے احتجاجی پروگرام کو کامیاب قرار دیا اور کہاکہ پولیس کی ہر کارروائی چیف منسٹر کی ہدایت پر ہورہی تھی ، لیکن ہمیں اس طرح طاقت کے ذریعہ روکا نہیں جاسکتا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT