Friday , September 22 2017
Home / سیاسیات / ممتا کی تقریر آمریت کی علامت :قائد اپوزیشن مزدوروں کے جلوس سے ممتابنرجی کا خطاب اناپسند ذہیت کا عکاس

ممتا کی تقریر آمریت کی علامت :قائد اپوزیشن مزدوروں کے جلوس سے ممتابنرجی کا خطاب اناپسند ذہیت کا عکاس

کولکتہ ۔ 28 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ریاستی حکومت اور مرکز پر پوشیدہ طور پر ہاتھ ملالینے کا الزام عائد کرتے ہوئے تاکہ کارکنوں کے حقوق کا استحصال کیا جاسکے، قائد اپوزیشن سوریہ کانت شرما نے آج کہا کہ چیف منسٹر ممتابنرجی کی اشتعال انگیز تقریر جو انہوں نے مزدوروں کے جلوس کو مخاطب کرتے ہوئے کی ہے، آمریت کی علامت تھی۔ ریاست اور مرکز ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں۔ جب بھی ٹریڈ یونینس اور مزدوروں کے حقوق کے استحصال کا مسئلہ پیدا ہوتا ہے وہ جمہوری آوازوں کا گلا گھونٹ دینا چاہتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر عام آدمی اور مزدوروں کے اقتدار کا منظر 2 ستمبر کی عام ہڑتال کے دوران دیکھیں گی۔ مشرا کا تبصرہ ممتابنرجی کی جانب سے دائیں بازو کی ٹریڈ یونینوں کو خبردار کرنے کے پس منظر میں اہمیت رکھتا ہے۔ ممتابنرجی نے 2 ستمبر کو ہڑتال نہ کرنے کا انتباہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ بنگال کے عوام بند کی تائید میں نہیں ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ممتابنرجی کا تبصرہ ایک ٹی ایم سی کیلئے بائیں بازو کو سبق سکھانا صرف ایک منٹ کا کام ہے ، آمریت کی علامت ہے۔ ممتابنرجی نے آج کہا کہ انہیں سابق سکھانے کیلئے صرف ایک منٹ لگے گا۔ مشرا نے کہا کہ ان کی اشتعال انگیز تقریر صرف ان کی انانیت اور آمریت کی ذہنیت کی عکاسی کرتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT