Thursday , June 29 2017
Home / شہر کی خبریں / منسوخ شدہ کرنسی تبدیلی کی کوششیں

منسوخ شدہ کرنسی تبدیلی کی کوششیں

بیرون ملک روانہ کئے جانے والے پارسلوں پر نظر
حیدرآباد۔9 اپریل (سیاست نیوز) کرنسی تنسیخ کے فیصلہ کے بعد شروع ہونے والے کرنسی تبدیلی کے طریقہ کار پر مختلف گوشوں سے مختلف اطلاعات کے بعد اب ہندستان سے بیرون ملک روانہ کئے جانے والے پارسلس پر کسٹمس کی نظریں مرکوز ہیں۔ کسٹمس عہدیداروں کے مطابق ہندستانی شہری منسوخ 1000اور 500 کے کرنسی نوٹ بیرون ملک روانہ کررہے ہیں تاکہ غیر مقیم ہندستانی واپسی کے بعد ملک میں موجود کسی ریزرو بینک کی شاخ پر قانونی طریقہ سے ان کرنسی نوٹوں کو تبدیل کرواسکیں۔ باوثق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق ملک کے بیشتر شہروں میں خدمات انجام دینے والے بین الاقوامی کوریئرخدمات کے ذریعہ روانہ کی جانے والی اشیاء پر خصوصی نظریں رکھی جا رہی ہیں کیونکہ منسوخ کرنسی روانہ کرنے والے ان کرنسی نوٹوں کو کتاب یا پھر دستاویزات کے نام سے روانہ کرنے لگے ہیںکیونکہ غیر مقیم ہندستانیوں کیلئے حکومت نے کرنسی تبدیلی کی مدت 30جون تک رکھی ہے اور یہ سہولت ریزرو بینک کی مخصوص شاخوں پر دستیاب ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ قوانین کے مطابق منسوخ کرنسی کے ساتھ ملک واپس ہونے والے غیر مقیم ہندستانیوں کو واپسی کے وقت ائیر پورٹ پر ریڈ چیانل سے باہر نکلنا ہوگا اور اس دوران انہیں کسٹمس عہدیداروں کو یہ بتانا لازمی ہوگا کہ ان کے پاس کتنی مقدار میں منسوخ کرنسی موجود ہے اور اس کا سرٹیفیکٹ کسٹمس سے حاصل کرنے کے بعد ہی ان کرنسی نوٹوں کو ریزرو بینک کے ذریعہ تبدیل کروایا جاسکتا ہے۔ کسٹمس کی جانب سے حالیہ عرصہ میں ملک کے مختلف مقامات سے بیرون ملک منسوخ کرنسی روانہ کرنے کی کوشش پر تین مقدمات درج کئے جا چکے ہیں اور ان میں دو پارسلس کا اندراج بطور کتب کروایا گیا تھا اور ایک پارسل کو دستاویزات کی شکل دی گئی تھی۔ محکمہ کسٹمس عہدیداروں کی جانب سے ان مقدمات کے اندراج کے بعد ملک کے تمام بڑے شہروں سے بیرون ملک روانہ کئے جانے والے پارسلس کی تنقیح اور چوکسی اختیار کرنے کی ہدایت دی گئی ہے تاکہ منسوخ کرنسی کو ملک کے باہر جانے سے روکا جا سکے۔بتایا جاتا ہے کہ اس سلسلہ میں ملک کے تمام بین الاقوامی ہوائی اڈوں پر بھی چوکسی میں اضافہ کردیا گیا ہے تاکہ ہندستان سے روانہ ہونے والے مسافرین کو منسوخ کرنسی لے جانے سے روکا جاسکے کیونکہ اس بات کی بھی شکایات موصول ہو رہی ہیں کہ کچھ لوگ منسوخ کرنسی کو تبدیل کروانے اور بیرون ملک روانہ کرکے واپس منگوانے اسمگلنگ کا طریقہ کار بھی اختیار کرنے لگے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT