Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / منموہن سنگھ بہترین وزیر فینانس ‘ ناکام وزیراعظم

منموہن سنگھ بہترین وزیر فینانس ‘ ناکام وزیراعظم

مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی کا منموہن سنگھ کی تنقید پر ردعمل
ممبئی ۔14فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) منموہن سنگھ کی جانب سے اُن کی پالیسی مفلوج ہوجانے کا تنقیدی بیان دینے کے بعد مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہا کہ کانگریس قائد نے بحیثیث مرکزی وزیر فینانس ’’ عظیم کام ‘‘ کیا تھا لیکن ان کا اصلاحات کا عمل ان کے وزیراعظم بننے کے بعد رک گیا ۔ اُن کے ساتھ انصاف کی بات یہی ہے کہ بحیثیت وزیراعظم اصلاحات کا آغاز کرتے ہوئے انہوں نے ایک عظیم کام کیا تھا لیکن یہ عمل اُس وقت بند ہوگیا جب کہ وہ وزیراعظم بن گئے ۔ وہ سی این این ۔ ایشیاء بزنس فورم کے اجلاس کے دوران خطاب کررہے تھے جو ’’ میک ان انڈیا ویک ‘‘ کے سلسلہ میں علحدہ طور پر منعقد کیا گیا تھا ۔ اس پروگرام کا آغاز کل ہوا ۔ جیٹلی نے کل سابق وزیراعظم منموہن سنگھ پر ایک انٹرویو میں یہ کہتے ہوئے جوابی وار کیا کہ مودی حکومت سے اپوزیشن نے ربط پیدا نہیں کیا اور نہ ملک کی معیشت کیلئے کافی پیشرفت کی ۔ فیس بک پر اپنی تحریر میں جیٹلی نے کہا کہ سابق یو پی اے حکومت سے موجودہ این ڈی اے حکومت تک پالیسی مفلوج رہی ۔ جب کہ عالمی سطح پر اس کا مقام درخشاں تھا اور کانگریس اہم جی ایس ٹی بل کی منظوری روکتی رہی جس کا مقصد درحقیقت ’’ سیاسی‘‘ تھا ۔ جیٹلی نے مزید کہا کہ یو پی اے دور حکومت کے برعکس جب کہ پالیسیاں کانگریس ہیڈ کوارٹرس 24اکبر روڈ پر طئے کی جاتی تھیں ۔ این ڈی اے حکومت میںوزیراعظم نریندر مودی کا فیصلہ قطعی ہوتا ہے ۔ سابق صدور اور وزرائے اعظم بہت کم کچھ کہتے تھے لیکن جب وہ کہتے تھے تو پوری قوم ان کی بات سنتی تھی اور اس پر توجہ دیتی تھی کیونکہ وہ قوم کی دانشمندی کی نمائندگی کرتے تھے ۔ ان سے غیرجانبداری کی توقع کی جاتی تھی اور ان سے تعمیری مشورے دینے اور بعض اوقات طاقتور پیغام اپنی سیاسی پارٹی کو دینے کی توقع رکھی جاتی تھی جو قومی مفاد کے مطابق ہو۔

TOPPOPULARRECENT