Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / منگلورو میں امیت شاہ کے خلاف طلبہ کا احتجاج

منگلورو میں امیت شاہ کے خلاف طلبہ کا احتجاج

منگلورو۔21اگست ( سیاست ڈاٹ کام) کالج طلبہ کی ایک اسوسی ایشن نے منگلورو یونیورسٹی کے انتظامیہ پر الزام عائد کیا ہے کہ انہوں نے اپنا آڈیٹوریم بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ کے ایک سیاسی پروگرام کیلئے کرایہ پر دیاہے جس کی وجہ سے یونیورسٹی میں سیاسی سرگرمیوں کی راہ ہموار ہورہی ہے ۔ ترنگا یاترا کو قومی صدر بی جے پی امیت شاہ نے جھنڈی دکھاکر یونیورسٹی کے احاطہ سے روانہ کیا ۔ دنکر شٹی کالج طلبہ اسوسی ایشن کے صدر نے الزام عائدکیا کہ یونیورسٹی نے ایک سیاسی پروگرام کے اہتمام کے لئے اپنا آڈیٹوریم کرایہ پر دیا ہے ۔ یونیورسٹی انتظامیہ کو اپنے احاطہ میں ایسے پروگراموں کی حوصلہ افزائی نہیں کرنی چاہیئے ۔ اس پروگرام میں وزیراعظم بھی شرکت کرنے والے تھے ۔ دریں اثناء بی جے پی رکن پارلیمنٹ نلن کمار قتیل نے کہاکہ یہ پروگرام غیر سیاسی ہے ۔ بی جے پی کے علامتی جھنڈے اس پروگرام میں استعمال نہیں کئے جائیں گے ۔ 16ویں صدی کے نصف آخر میں  پرتگالی حکمرانی کے خلاف جنگ کرنے والی رانی ابکا کے کارناموں اور دیگر مجاہدین آزادی کے کارناموں کو یاد کیا جائے گا ۔ دریں اثناء منگلورو سے موصولہ اطلاع کے بموجب قومی صدربی جے پی امیتشاہ نے ایک سیکل ریالی کو جھنڈی دکھاکر روانہ کیا ۔ یہ پارٹی کی ملک گیر ترنگایاترا کا ایک حصہ تھی ۔ تقریباً 400 موٹر سیکلیں اس جلوس میں حصہ لے رہی ہیں ۔دریں اثناء پاناجی سے موصولہ اطلاع کے بموجب کانگریس نے آج بی جے پی قومی صدر امیت شاہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایسا معلوم ہوتاہے کہ قومی صدر بی جے پی امیت شاہ بی جے پی زیر اقتدار ریاست میں پھیلے ہوئے کرپشن کے بارے میں واقف نہیں ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ انہوں نے بدعنوانیوں سے پاک حکومت گوا میں فراہم کرنے کا تیقن دیا ہے ۔ بشرطیکہ گوا میں بی جے پی حکومت برسراقتدار آجائے ۔ اپنی انتخابی مہم کا آغاز کرتے ہوئے گوا کانگریس کے ترجمان ٹراجانو ڈی میلو نے ایک پریس کانفرنس میں کہاکہ بی جے پی گوا کو کرپشن سے آزاد حکومت فراہم کرنے کا تیقن دے رہی ہے ۔اگر بی جے پی دوبارہ ریاست میں برسراقتدار آجائے ‘ایسا معلوم ہوتا ہے کہ پارٹی عوام کو بیوقوف سمجھتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT