Wednesday , October 18 2017
Home / ہندوستان / منی پور میں تشدد کی لہر، دو گاڑیاں نذر آتش

منی پور میں تشدد کی لہر، دو گاڑیاں نذر آتش

نئے اضلاع کی تشکیل کے خلاف عسکریت پسند تنظیم کی معاشی ناکہ بندی
امپھال۔19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) منی پور کے ضلع سینا پتی میں آج 2 گاڑیوں کو آگ لگادینے کے بعد تشدد مزید پھیل گیا جبکہ امپھال اسٹیٹ ڈسٹرکٹ میں غیرمعینہ کرفیو برقرار ہے۔ یونائیٹڈ ناگا کونسل کی جانب سے معاشی ناکہ بندی کے بعد موبائیل ڈاٹا سرویس معطل کردی گئی ہے۔ تاہم امپھال ویسٹ ڈسٹرکٹ میں آج صبح کرفیو اٹھادیا گیا۔ پولیس نے بتایا کہ کشیدہ صورتحال کے دوران نامعلوم افراد نے آج صبح ضلع سنیا پتی کے ناگا تیپو علاقہ میں 2 گاڑیوں بشمول ایک مسافرین کو آگ لگادی جبکہ امپھال ایسٹ ڈسٹرکٹ کے سوم بنگ میں کل شب سابق وزیر مارونگ مکونگا کی 4 گاڑیوں کو تباہ کردیا گیا تھا۔ امپھال۔اکھورول روڈ پر کل ایک ہجوم کی جانب سے 22 گاڑیوں پر حملہ کے پیش نظر پولیس نے سخت چوکسی اختیار کرلی ہے تاکہ تشدد پر فی الفور قابو پایا جاسکے۔علاوہ ازیں حکام نے 25 ڈسمبر تک موبائیل انٹرنیٹ سرویس کو بند کروادیا ہے۔ جبکہ یکم نومبر سے دو اہم شاہراہوں کی ناکہ بندی سے اشیاء ضروریہ کی قلت سے عوام کی مشکلات پیش آرہے ہیں۔ یو این سی نے یہ احتجاج حکومت کی جانب سے 7 نئے اضلاع کی تشکیل کے بعد سے شروع کیا ہے اور حالات اس وقت سے کشیدہ ہوگئے جب گزشتہ چند دنوں سے عسکریت پسندوں نے پولیس پر گھات لگاکر حملہ کردیا اور گزشتہ جمعرات کو 3 پولیس ملازمین ہلاک اور دیگر 14 زخمی ہوگئے۔ امپھال ویسٹ ڈسٹرکٹ کے ناگارام علاقہ میں منی پور ناگا پیپلز فرنٹ نے 3 بم دھماکے بھی کئے ہیں اور کل ضلع تمینگ لانک میں عسکریت پسندوں نے انڈین ریزرو بٹالین کی ایک چوکی پر حملہ کرکے 9 سرویس ہتھیار لے کر فرار ہوگئے۔ عسکریت پسندوں کی نقل و حرکت کو روکنے اور مخدوش مقامات پر امن و قانون کی برقراری کے لئے ریاستی پولیس متحرک ہوگئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT