Saturday , August 19 2017
Home / سیاسیات / مودی اور امیت شاہ پر تحقیقات میں مداخلت کا الزام

مودی اور امیت شاہ پر تحقیقات میں مداخلت کا الزام

نئی دہلی ۔ 20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج بی جے پی کے اس الزام کو ’’جھوٹ کا پلندہ‘‘ قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا کہ سونیا گاندھی اور راہول گاندھی نے عشرت جہاں کیس میں ترمیم کیلئے اُس وقت کے وزیرداخلہ پی چدمبرم کو ہدایت دی تھی۔ کانگریس کے اعلیٰ ترجمان رندیپ سرجے والا نے اپنے بیان میں کہا کہ ’’آر ایس ایس کے برخلاف، سونیا گاندھی یا راہول گاندھی نے کبھی بھی اپنے وزیرداخلہ پی چدمبرم، یا کسی اور شخص یا پھر حکومت کی اتھاریٹی پر فائز کسی ذمہ دار کو کبھی بھی کوئی ہدایت نہیں دی۔ عشرت جہاں کیس میں بھی ان کی جانب سے کوئی ہدایت دینے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا‘‘۔ کانگریس نے عشرت جہاں کیس پر جاری اس لڑائی کو حکمراں بی جے پی کے کیمپ تک پہنچاتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی اور بی جے پی سربراہ امیت شاہ پر اس فرضی انکاؤنٹر کیس کے ضمن میں جاری عدالتی عمل کو راستہ سے ہٹانے کی کوشش کرنے کا الزام عائد کیا اور ان سے کہا کہ وہ یہ بتائیں کہ رواں مقدمہ کو بند کرنے کیلئے ان کی بے چینی کے اصل محرکات کیا ہیں۔

 

رام مندر بی جے پی کا
انتخابی موضوع نہیں : کیشو پرساد موریا
کانپور۔ 20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) اُترپردیش بی جے پی کے سربراہ کیشو پرساد موریا نے آج کہا کہ رام مندر اگرچہ ہندوؤں کے اعتقاد کا مسئلہ ضرور ہے لیکن یہ کبھی بھی ان کی پارٹی کا انتخابی ایجنڈہ نہیں رہا ہے۔ موریا نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’نہ صرف میں بلکہ کروڑوں ہندو لارڈ رام پر اعتقاد رکھتے ہیں تاہم رام مندر ہمارا انتخابی ایجنڈہ کبھی نہیں رہا۔ یہ مسئلہ عدالت میں زیرتصفیہ ہے اور اس کا فیصلہ ہر کسی کیلئے قابل قبول ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT