Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / مودی حکومت ، راجن جیسی قابل شخصیت کیساتھ کام کرنے کی اہل نہیں

مودی حکومت ، راجن جیسی قابل شخصیت کیساتھ کام کرنے کی اہل نہیں

دوسری میعاد قبول نہ کرنے گورنر آر بی آئی کے فیصلہ پر اپوزیشن کا ردعمل ، جانشین کیلئے قیاس آرائیاں
نئی دہلی ۔ /14 جون (پی ٹی آئی) کانگریس نے آج آر ایس ایس اور بی جے پی کے چند وزراء پر ریزرو بینک آف انڈیا کے گورنر رگھورام راجن کے خلاف مہم چلانے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ دوسری میعاد قبول نہ کرنے راجن کا فیصلہ اس ملک کیلئے انتہائی ناخوشگوار اور افسوسناک ہے ۔ کانگریس کے سینئر لیڈر ایم ویرپا موئیلی نے کہا کہ موجودہ حکومت ، رگھورام راجن کی سطح کی کسی شخص کے ساتھ کام کرنے کی اہلیت نہیں رکھتی ۔ موئیلی نے کہا کہ ’’مجھے اس کی وجہ معلوم نہیں ، بلاشبہ وہ یہ (وجہ) اچھی طرح جانتے ہیں ۔ لیکن بی جے پی ترجمان اور وزیر تجارت نرملا سیتا رامن اور ایک اہم بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی کے علاوہ ناگپور آر ایس ایس کیمپ کے بشمول چند دیگر افراد نے ان (راجن) کے خلاف مہم چلائی تھی ۔ آر بی آئی سربراہ کی حیثیت سے دوسری میعاد قبول نہ کرنے رگھورام راجن کے فیصلے کو موئیلی نے ملک کیلئے ایک انتہائی ناخوشگوار قرار دیا اور کہا کہ ’’موجودہ حکمرانی اور موجودہ عنان اقتدار کے تناظر میں میں یہ سمجھتا ہوں کہ وہ (حکومت) اس (راجن کی ) سطح کے کسی شخص کے ساتھ کام کرنے کی اہلیت و صلاحیت نہیں رکھتی ۔ وہ (راجن) ایک عالمی شخصیت ہیں ۔ میں سمجھتا ہوں کہ ہمارا ملک اس باصلاحیت شخصیت کے ساتھ کام کرنے کی اہلیت رکھتا ہے ۔

‘ آر جے ڈی کے ترجمان منوج جھا نے بھی ایسے ہی نظریات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آر بی آئی گورنر کی طرف سے کئے گئے اقدامات سے ملک کے عوام خود کو انتہائی محفوظ محسوس کررہے تھے ۔ لیکن جن افراد اپنے مخصوص محرکات کی بنیاد پر ان کے بارے میں عجیب و غریب خیالات و نظریات کا اظہار کررہے تھے ۔ منوج جھا نے مزید کہا کہ راجن نے دوسری میعاد قبول نہ کرنے کا درست فیصلہ کیا ہے کیونکہ اگر دوسری میعاد کیلئے یا عہدہ سنبھالنے کو وہ سبرامنیم سوامی جیسے افراد کے ساتھ کام کیلئے مجبور ہوجاتے ۔ سابق وزیر فینانس پی چدمبرم نے کہا ہے کہ راجن کے فیصلہ پر انہیں اگرچہ دکھ ضرور ہوا ہے لیکن کوئی حیرت نہیں ہوئی ہے ۔ کانگریس کے ایک ترجمان منیش تیواری نے الزام عائد کیا کہ حکومت نے ایک اچھے آدمی کا غیر ضروری پیچھا اٹھایا کیونکہ وہ (حکومت) اس حد تک جرأتمند نہیں تھی کہ وہ راجن کو سبکدوشی کیلئے کہہ سکے ۔ اس دوران راجن کے جانشین کے بارے میں مختلف قیاس آرائیوں کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے ۔ اس ضمن میں ڈپٹی گورنر ارجت پٹیل ، سابق سی اے جی ونود رائے ، ایس بی آئی سربراہ ، ارون دھتی بھٹاچاریہ کے علاوہ دیگر کئی نام لئے جارہے ہیں ۔ بی جے پی ایم پی سبرامنیم سوامی نے کہا کہ ہم سب کو چاہئیے کہ راجن کو خیرآباد کہیں۔

TOPPOPULARRECENT