Monday , July 24 2017
Home / سیاسیات / مودی حکومت سچائی کی ہر آواز کو خاموش کرنے کوشاں ‘ راہول

مودی حکومت سچائی کی ہر آواز کو خاموش کرنے کوشاں ‘ راہول

سچائی کی طاقت کو ‘ طاقت کی سچائی سے دبانے کی کوششیں۔ نیشنل ہیرالڈ کی تقریب سے کانگریس نائب صدر کا حطاب
بنگلورو 12 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے آج مرکز کی نریندر مودی حکومت پر الزام عائد کیا کہ وہ ہر کسی کو زبردستی خاموش بٹھانے پر اتر آئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دلتوں کو مارپیٹ کی جا رہی ہے ‘ اقلیتوں کو دھمکایا اور خوفزدہ کیا جا رہا ہے جبکہ صحافیوں اور بیوروکریٹس کو دھمکایا بھی جا رہا ہے ۔ یہاں نیشنل ہیرالڈ اخبار کی ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے راہول گاندھی نے کہا کہ سچائی کی طاقت کو طاقت کی سچائی سے دبانے اور کچلنے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔ جس کسی نے سچ بولنے کی کوشش کی اور آواز بلند کی اسے نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔ راہول گاندھی نے الزام عائد کیا کہ ہزاروں صحافیوں کو وہ لکھنے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے جو وہ لکھنا چاہتے ہیں۔ صحافی ان سے کہتے ہیں کہ انہیں اپنی مرضی کے مطابق قلم چلانے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے ۔ کسانوں کے حالیہ احتجاج کے سلسلہ میں انہیں مدھیہ پردیش اور اترپردیش کا دورہ کرنے کی اجازت نہ دئے جانے کی یاد دہانی کرواتے ہوئے راہول گاندھی نے کہا کہ دونوں ہی ریاستوں میں انہیں سرحدات پر روک دیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ آج ہم اس ہندوستان میں رہ رہے ہیں ۔ اس ہندوستان میں جہاں طاقت سے سچائی تیار کرلی جاتی ہے ۔ ایک سوویت شاعر ( یوجینی یوتو شینکو ) کی ایک نظم کا راہول نے حوالہ دیا ۔ شاعر نے کہا تھا جب سچائی کو خاموشی سے بدل دیا جائے تو یہ خاموشی ایک جھوٹ ہوتی ہے ۔ راہول نے کہا کہ آج نریندر مودی حکومت بھی یہی کچھ کر رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہر کوئی جانتا ہے کہ سچائی کیا ہے لیکن وہ اسے بیا ن کرنے سے ڈرتے ہیں۔ اس تقریب میں نائب صدر جمہوریہ جناب حامد انصاری نے بھی شرکت کی ۔ انہوں نے نیشنل ہیرالڈ کی ایک یادگاری اشاعت بھی جاری کی جو ہندوستان کی آزادی کے 70 سال کی تکمیل پر عمل میں لائی گئی تھی ۔ کانگریس نائب صدر نے کہا کہ جب حال ہی میں نیشنل ہیرالڈ کے ایڈیٹر نے ان سے رابطہ کیا تو انہوں نے یہ واضح کردیا کہ کچھ وقت ایسا بھی ہوسکتا ہے کہ اخبار میں میرے ( راہول کے ) یا پارٹی یا اس کیا پالیسیوں کے خلاف تحریر کرنے کی ضرورت محسوس کی جائے ایسے وقت میں اخبار کے ایڈیٹر کو اس سے گریز نہیں کرنا چاہئے ۔ یہی وہ جذبہ ہے جو ہم نیشنل ہیرالڈ سے امید رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل ہیرالڈ ایک تحریک ہے اور ایک جذبہ ہے جو بہت مستحکم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس کو خاموش نہیں بٹھایا جاسکتا ۔ کانگریس لیڈر آسکر فرنانڈیز نے بھی خطاب کیا جو نیشنل ہیرالڈ کے بورڈ آف ڈائرکٹرس میں شامل ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل ہیرالڈ کی جانب سے اپنی ہندی اور اردو اشاعتوں کو بھی بحال کرنے کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ یہ اخبار 1938 میں پنڈت جواہر لال نہرو نے شروع کیا تھا اور اسے چند برس قبل بند کردیا گیا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ نیشنل ہیرالڈ کی ویب سائیٹ کا آٹھ ماہ قبل آغاز کیا گیا ہے اور اسے اب مکمل اپ گریڈ کیا جا رہا ہے اور اسے جاریہ ماہ کے اواخر تک کارکرد بنادیا جائیگا ۔ اس تقریب کو نیشنل ہیرالڈ انگریزی روزنامہ کی اشاعت کا پیش خیمہ سمجھا جا رہا ہے ۔ واضح رہے کہ اسی اخبار سے متعلق قانونی کشاکش میں بی جے پی سینئر لیڈر سبرامنین سوامی نے مقدمہ دائر کیا ہوا ہے جس میں راہول گاندھی اور سونیا گاندھی کا نام شامل کیا گیا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT