Friday , September 22 2017
Home / سیاسیات / مودی حکومت ٹوئیٹر کی بات سنتی ہے ، وزیراعظم وعدوں کی تکمیل میں ناکام : نتیش کمار

مودی حکومت ٹوئیٹر کی بات سنتی ہے ، وزیراعظم وعدوں کی تکمیل میں ناکام : نتیش کمار

پٹنہ ۔ /9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) بہار کے چیف منسٹر نتیش کمار نے گیا میں وزیراعظم نریندر مودی کی ریلی سے قبل آج ان (مودی) کی حکومت  پر طنز کیا اور کہا کہ مرکز صرف سوشیل نیٹ ورکنگ سائیٹ ٹوئیٹر کی بات سنتا ہے اور اس پر ہی عمل کرتا ہے ‘‘ ۔ نتیش کمار نے کالا دھن واپس لانے ، کسانوں کی زرعی پیداوار پر اقل ترین قیمت خرید میں اضافہ اور بہار کو خصوصی موقف دینے سے متعلق ان کی حکومت کی طرف سے کئے گئے وعدوں کی عدم تکمیل پر بھی سوال اٹھایا ۔ نتیش کمار نے وزیراعظم کی ریلی کے آغاز سے بمشکل ایک گھنٹہ قبل اپنی ٹوئیٹر پیغامات پر لکھا کہ ’’ ظاہر ہے کہ ان باتوں کا جواب دینے کیلئے پہلے شاید آپ کے پاس وقت نہ تھا ۔ امید ہے کہ اب آپ یہ کام کریں گے ۔ آپ کے تیار شدہ حوالہ کیلئے یہ پیغام دوبارہ پوسٹ کررہا ہوں ‘‘ ۔ مودی کے ساتھ طویل عرصہ سے جاری سیاسی لڑائی کے درمیان نتیش کمار نے ان (مودی) پر طنز کرتے ہوئے نتیش کمار نے کہا کہ ’’ بالآخر ہمارے پاس ایک ایسی حکومت ہے جس کو ہم بجا طور پر ’’مرکزی ٹوئیٹر سرکار‘‘ کہہ سکتے ہیں جو صرف ٹوئیٹر کی بات سنتی ہے اور اس پر ہی عمل کرتی ہے ‘‘ ۔ چیف منسٹر نے مزید کہا کہ ’’مودی جی ، اگرچہ آپ میرے کئی سوالات کا جواب نہیں دے  سکے ہیں لیکن اس بات پر خوش ہے کہ آپ نے میرے ٹوئیٹس کو مدنظر رکھتے ہوئے مظفر پور میں اپنی تقریر کا آغاز کیا تھا ‘‘ ۔
نتیش کمار نے اس سال کے اواخر کے دوران منعقد شدنی بہار اسمبلی انتخابات کے پیش نظر مودی کے ساتھ سیاسی معرکہ آرائی کے تازہ ترین مرحلہ کا آغاز کرتے ہوئے اپنے پیغام میں چند سوالات کئے ہیں ۔ ’’ زرعی پیداوار کی اقل ترین قیمت خرید میں اضافہ پر سب سے پہلے آپ نے ’’یوٹرن‘‘ لے لیا ۔ جس کے بعد کسانوں نے آپ کی بے رخی رہی اور بالاخر آپ نے اراضی بل متعارف کیا ۔ کیا یہی وعدے ہیں جو آپ کسانوں سے کئے تھے ؟ نتیش نے دوسرا سوال کیا کہ ’’ عوام ‘ کالے دھن کی واپسی سے انہیں ملنے والے ان 20-15 لاکھ روپئے کا انتظار کررہے ہیں جس کا آپ نے بیرونی ممالک سے واپس لانے کا وعدہ کیا تھا ۔ کیا اب ہم اس بات پر آپ سے کچھ سن سکیں گے ؟ ‘‘ انہوں نے کہا کہ ’’ آپ نے بہار کو خصوصی موقف دینے کا وعدہ کیا تھا ۔ 14 ماہ گزرچکے ہیں اور عوام ہنوز اس وعدہ کی تکمیل کا انتظار کررہے ہیں ‘‘ ۔

TOPPOPULARRECENT