Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / مودی حکومت پر جمہوریت کے قتل کا الزام

مودی حکومت پر جمہوریت کے قتل کا الزام

پارٹی کا ’جمہوریت بچاؤ‘ جلسہ ‘ صدر کانگریس سونیا گاندھی کا خطاب ، سونیا ، راہول اور منموہن گرفتار

نئی دہلی ۔ 6 مئی (سیاست ڈاٹ کام) سونیا گاندھی نے آج جارحانہ موقف اختیار کرتے ہوئے مودی حکومت پر جمہوریت کے قتل اور اپوزیشن کے خلاف ’’بے بنیاد الزامات‘‘ کی مہم چلانے کا الزام عائد کیا جبکہ کانگریس قائدین سڑکوں پر نکل آئے اور پارلیمنٹ کے قریب خود کو گرفتاری کیلئے پیش کیا۔ سابق وزیراعظم منموہن سنگھ، نائب صدر کانگریس راہول گاندھی کو صدر کانگریس سونیا گاندھی کے ساتھ حراست میں لے لیا گیا۔ سونیا گاندھی نے پیش قیاسی کی کہ اپنے انداز کارکردگی سے حکومت نے ظاہر کردیا ہیکہ اس کے دن گنے جاچکے ہیں۔ جنترمنتر پر کانگریس کے ’’جمہوریت بچاؤ‘‘ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے سونیا گاندھی نے کہاکہ ہمیں خوفزدہ کرنے یا بدنام کرنے کی کوشش مت کرو۔ زندگی نے مجھے جدوجہد کی تعلیم دی ہے۔ ہم نے کئی چیلنجوں کا سامنا کیا ہے۔ وہ نہیں جانتے کہ ہم کس مٹی کے بنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی اپوزیشن کا شعور بیدار کرنے کیلئے پارلیمنٹ کے اندر اور باہر پورے جوش کے ساتھ اپنا کردار ادا کرے گی۔ انہوں نے پارٹی کارکنوں سے کہا کہ وہ مودی حکومت کو بے نقاب کردیں۔ راجیہ سبھا میں اپوزیشن کے قائد غلام نبی آزاد اور لوک سبھا میں کانگریس مقننہ پارٹی کے قائد ملک ارجن کھرگے اور دیگر افراد نے پارلیمنٹ اسٹریٹ پولیس اسٹیشن پر خود کو گرفتاری کیلئے پیش کیا جبکہ ان کے جلوس کو پارلیمنٹ تک جانے سے روک دیا گیا تھا۔ کچھ دیر بعد انہیں رہا کردیا گیا۔ صدر کانگریس نے کہا کہ انہیں اچھی طرح سمجھ لینا چاہئے کہ جب معاملات ناقابل برداشت ہوجائیں تو ہندوستان کے عوام انہیں سبق سکھانا اچھی طرح جانتے ہیں۔ مودی حکومت اپنے اختیارات کا استحصال کررہی ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہیکہ اس کے دن گنے جا چکے ہیں۔ جلسہ عام سے نائب صدر راہول گاندھی، سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے بھی خطاب کرتے ہوئے اروناچل پردیش اور اتراکھنڈ میں کانگریس حکومتوں کو اقتدار سے بیدخل کرنے کی حرکت پر مودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ آگسٹا ویسٹ لینڈ مسئلہ ایسا معلوم ہوتا ہیکہ ان کے دماغ پر بوجھ بنا ہوا تھا جبکہ سونیا گاندھی نے مودی کے اندازکارکردگی پر تنقید کرتے ہوئے ان پر الزام عائد کیا کہ وہ اپوزیشن پارٹیوں کے قائدین پر بے بنیاد الزامات عائد کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ ان سے کہہ دینا چاہتی ہیں کہ یہ غلطی کہ کانگریس کمزور ہوچکی ہے انہیں نہیں کرنی چاہئے۔ کانگریس کبھی بھی ناانصافی کے آگے نہیں جھکی۔ سونیا گاندھی نے کہا کہ ہم ایک چوکس اپوزیشن کا آئندہ دنوں میں پورے جوش اور جذبہ کے ساتھ کردار پارلیمنٹ کے اندر اور باہر ادا کریں گے اور ناانصافی کے خلاف جنگ کریں گے۔

 

وزیراعظم مودی کا سونیا گاندھی پر درپردہ حملہ
’’مجھے کرپشن پر لگام کسنے پر نشانہ بنایا جارہا ہے‘‘

پلاکڈ ؍ چینائی ، 6 مئی (سیاست ڈاٹ کام) متنازعہ آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملت پر سونیاگاندھی کو درپردہ حملے کا نشانہ بناتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے آج اُن کے اطالوی رشتوں کا مسئلہ اٹھایا اور اشارہ دیا کہ خاطی چاہے کتنے ہی بڑی شخصیتیں کیوں نہ ہوں، انھیں سزا دی جائے گی۔ ایک اطالوی عدالت واقع میلان کے اس فیصلے پر کہ اینگلو۔ انڈین فرم کی جانب سے ہندوستان کو وی وی آئی پی چاپرز کی سپلائی کیلئے ’’کرپشن‘‘ ہوا ہے، مودی نے اپنی خاموشی توڑتے ہوئے اس معاملت کو ’’چوری‘‘ قرار دیا۔ وزیراعظم نے کیرالا میں آگسٹا ویسٹ لینڈ معاملت اور کیرالا کے سولار اسکام کا ذکر کیا تاکہ ٹاملناڈو اور کیرالا کی انتخابی ریلیوں میں کٹر حریف کانگریس کو حاشیہ پر رکھا جاسکے۔ انھوں نے کہا کہ انھیں اس لئے نشانہ بنایا جارہا ہے کیونکہ انھوں نے کرپشن پر ’’لگام کس رکھی‘‘ ہے۔ مودی کا سونیا کے خلاف درپردہ حملہ چند گھنٹوں میں سامنے آیا جبکہ صدر کانگریس نے جارحانہ تیور کے ساتھ نئی دہلی میں مودی حکومت کو جمہوریت کے ’’قتل‘‘ کی موردِ الزام ٹھہرایا اور دعویٰ کیا کہ عدالتی فیصلے کے بعد اپوزیشن کے خلاف ’’بے بنیاد الزامات‘‘ کی مہم چھیڑ دی گئی ہے۔ مودی نے کانگریس کو کرپشن کے موضوع پر نشانہ بناتے ہوئے 2G اسپکٹرم الاٹمنٹ اور کوئلہ ہراج میں مبینہ بے قاعدگیوں کا حوالہ بھی دیا۔

TOPPOPULARRECENT