Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / مودی حکومت کیخلاف محنت کش طبقہ کی مجوزہ ملک گیر ہڑتال

مودی حکومت کیخلاف محنت کش طبقہ کی مجوزہ ملک گیر ہڑتال

حیدرآباد۔/26اگسٹ، ( سیاست نیوز) وزیر اعظم نریندر مودی کی زیر قیادت مرکزی حکومت کے خلاف احتجاج اور ناراضگی کا اظہار کرنے کیلئے قومی سطح کی مزدور تنظیموں نے 2ستمبر کو ملک گیر سطح پر عام ہڑتال کا فیصلہ کیا ہے۔ اس عام ہڑتال کو کامیاب بنانے کی تلنگانہ راشٹرا کارمیکا سمکھیا ریاستی  کمیٹی نے تمام مزدور پیشہ تنظیموں اور تمام شعبہ حیات سے تعلق رکھنے والوں سے اپیل کی۔ مسرس ایم ورکم کمار صدر اور جی کرشنا جنرل سکریٹری تلنگانہ راشٹرا کارمیکا سمکھیا ریاستی کمیٹی نے بتایا کہ نریندر مودی کو وزارت عظمیٰ کا عہدہ سنبھالے 14ماہ مکمل ہونے جارہے ہیں لیکن انہیں ملک کے عوام یا مزدور پیشہ طبقہ کے مسائل کی یکسوئی سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔ بیرونی سرمایہ داروں اور ملک اور بیرون ممالک کے اداروں سے ملک میں صنعتوں کا قیام عمل میں لانے کیلئے دباؤ ڈالا جارہا ہے۔ بیرونی دورے ہی ان کی اولین ترجیح ہیں، ان قائدین نے مسلمہ حیثیت رکھنے والے تمام زمروں کے صنعتی اداروں میں اقل ترین اجرت 15ہزار روپئے، ای ایس آئی، پراویڈنٹ فنڈ، وظیفہ کی سہولت فراہم کرنے کے  علاوہ نظام شوگر فیکٹریوں کو حکومت کی جانب سے حاصل کرلینے، تلنگانہ میں بند کردی گئی اعظم جاہی ملز، راما گنڈم فرٹیلائزر کمپنی، کھمم میں اے پی ریانس، میدک کی اے پی اسکوٹرس، آلوین واچ ڈیویژن حیدرآباد، آئی ڈی پی ایل اور ریپبلک فورج کمپنی کو از سر نو کارکرد بنانے کیلئے اقدامات کرنے، قاضی پیٹ میں کوچ فیکٹری کا قیام عمل میں لانے کا حکومت سے مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT