Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / مودی حکومت کی دوسری سالگرہ پر اپوزیشن کی تنقید

مودی حکومت کی دوسری سالگرہ پر اپوزیشن کی تنقید

ماحول متعصب بنانے لوجہاد اور گھر واپسی پروگرامس ،بی جے پی نے تنقید مسترد کردی
نئی دہلی ؍ ممبئی ۔ 26 مئی (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے حکومت کی حلیف شیوسینا اور دیگر اپوزیشن پارٹیوں کی سخت تنقید کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس یہ بات کہہ رہی ہے جس کے پاس سوائے ’’کھوکھلے وعدوں اور ناٹک‘‘ اور کچھ نہیں ہے۔ بی جے پی نے کانگریس کو دھوکہ دہی کی ویب سائیٹ قرار دیا۔ شیوسینا نے الزام عائد کیا تھا کہ این ڈی اے افراط زر پر قابو پانے میں ناکام رہی ہے۔ وہ سرحد پار سے دہشت گردی کو بھی کچل نہیں سکی اور اس نے اپنے دورحکومت میں ایسی اسکیمیں بنائی ہیں جن کے فوائد عوام تک نہیں پہنچتے۔ سینا کے ترجمان سامنا میں شدید تنقید پر مبنی ایک مضمون شائع کیا گیا ہے۔ کانگریس کے ترجمان اعلیٰ رندیپ سرجے والا نے دہلی میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ صرف بھاشن دیتے ہیں اور ان کا یہ لکچر بھی ٹھوس نہیں ہوتا۔ حکمرانی کا دور دور تک پتہ نہیں ہے۔ مودی کا اچھے دن کا نعرہ ایک مذاق بن گیا ہے اور مودی کانگریس کو ہی دھوکہ دہی کی ویب سائیٹ قرار دے رہے ہیں۔ کانگریس نے حکومت کی دوسری سالگرہ پر برسرعام مباحث کا چیلنج دیا اور کہا کہ حکومت کا وجود صرف اخبارات اور خبر رساں چینل تک محدود ہے۔ راجیہ سبھا میں قائد اپوزیشن غلام نبی آزاد نے اور سابق مرکزی وزیر کپل سبل نے بھی سرجے والا کی تائید کرتے ہوئے مودی حکومت پر سخت تنقید کی۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ملک میں گذشتہ دو سال کے دوران صرف ’’کھوکھلے وعدے اور ناٹک‘‘ دیکھنے کا موقع ملا ہے۔ مودی حکومت نے آزادی کے بعد سے اب تک کی سب سے مایوس کن حکومت ہے۔ کانگریس کے ترجمان منیش تیواری نے احمدآباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت ملک کی سیکولر بنیادوں کو ختم کرکے عدم رواداری کا ماحول پیدا کرنا چاہتی ہے جس کیلئے وہ گھر واپسی اور لو جہاد جیسے پروگراموں کا آغاز کرچکی ہے۔

TOPPOPULARRECENT