Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / مودی حکومت کے بڑے پیمانے پر معاشی اصلاحات

مودی حکومت کے بڑے پیمانے پر معاشی اصلاحات

ہوا بازی اور فوڈ پراسیسنگ شعبوں میں صدفیصد ایف ڈی آئی ، دفاعی اور فارما شعبہ میں بھی رعایتیں
روزگار کے مواقع فراہم ہوں گے
نریندرمودی کا موجودہ موقف
٭ وزیراعظم نریندر مودی نے اصلاحات کے دوسرے مرحلہ کے اعلان پر کہا کہ ہندوستان کو ایف ڈی آئی کیلئے دنیا بھر میں سب سے کھلی معیشت بنایا جائے گا اور اس سے روزگار کے مواقع فراہم ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایف ڈی آئی پالیسی میں ترمیمات سے تجارت کرنا مزید آسان ہوجائے گا ۔ مودی نے ٹوئٹ کیا کہ حکومت نے بڑے پیمانے پر ایف ڈی آئی میں سہولتیں فراہم کی ہیں جس کا مقصد روزگار کے مواقع فراہم کرنا ہے۔
ایف ڈی آئی سے بیروزگاری بڑھے گی
نریندر مودی کا سابقہ موقف
٭ وزیراعظم نریندر مودی جس وقت چیف منسٹر گجرات تھے اور انہوں نے بی جے پی وزارت عظمیٰ امیدوار کی حیثیت سے انتخابی مہم کے دوران ایف ڈی آئی پر کانگریس زیرقیادت یوپی اے حکومت کو شدید تنقیدوں کا نشانہ بنایا اور اس پالیسی کی مخالفت کی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ ریٹیل شعبہ میں ایف ڈی آئی کے نتیجہ میں چھوٹے دکاندار اور گھریلو مینوفیکچرنگ شعبہ بری طرح متاثر ہوگا۔ اس کے علاوہ بیروزگاری میں اضافہ ہوگا۔ مودی نے حکومت کے اس اقدام کو مخالف عوام قرار دیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ ایف ڈی آئی کے نتیجہ میں بیرونی ممالک کی سستی اشیاء کو ہندوستان میں لایا جائے گا۔
نئی دہلی ۔ 20 جون (سیاست ڈاٹ کام) حکومت نے آج غیرملکی راست سرمایہ کاری (ایف ڈی آئی) اصلاحات کی دوسری لہر کا اعلان کیا جس کے تحت شہری ہوا بازی اور فوڈ پراسیسنگ شعبوں میں 100 فیصد غیرملکی راست سرمایہ کاری کی اجازت دی گئی۔ اسی طرح دفاع اور فارماسیوٹیکل شعبہ میں مزید رعایات کا اعلان کیا ہے۔ حکومت نے آر بی آئی کے اخراج کے گورنر رگھورام راجن کے فیصلے کے اثرات کو زائل کرنے کے مقصد سے یہ اہم فیصلے کئے ہیں۔ مقامی سورسنگ پالیسی میں غیرمعمولی تبدیلی لائی گئی جس کے تحت امریکی کمپنی ایپل اب ہندوستان بھر میں اپنے اسٹورس قائم کرسکتی ہے۔ اس کے علاوہ براڈ کاسٹنگ خدمات، خانگی سیکوریٹی ایجنسیوں اور انیمل ہسبینڈری کے شعبوں میں بھی غیرمعمولی فیصلے کئے ہیں۔ وزیراعظم نریندر مودی کی زیرصدارت آج منعقدہ اعلیٰ سطحی اجلاس میں اصلاحات کے یہ اہم فیصلے کئے گئے۔ وزیراعظم کے دفتر نے بتایا کہ ان فیصلوں کے باعث ہندوستان دنیا بھر میں ایف ڈی آئی کیلئے سب سے زیادہ کھلی معیشت بن جائے گا لیکن ان فیصلوں پر نکتہ چینی کرنے والوں کا یہ کہنا ہیکہ گورنر راجن نے ہفتہ کو آر بی آئی کے اخراج اور 4 ستمبر کے بعد شعبہ تدریس سے دوبارہ وابستگی کا جو اعلان کیا ہے اس کے پیش نظر حکومت نے فوری طور پر یہ فیصلہ کیا ہے۔ ایف ڈی آئی اصلاحات کی اطلاع کا اسٹاک مارکٹ پر مثبت اثر ہوا اور صبح کے اوقات میں جو گراوٹ آئی تھی وہ تبدیل ہوگئی۔ کانگریس ترجمان جئے رام رمیش نے فیصلوں کو ’’عجلت پسندی‘‘ میں کیا گیا اقدام قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر گورنر آر بی آئی کل اپنا فیصلہ نہ سناتے تو حکومت یہ اعلان نہ کرتی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نہیں سمجھتی کہ ایف ڈی آئی کوئی جادو کی چھڑی ہے۔ وزیرکامرس نرملا سیتارامن نے میڈیا کو تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ان فیصلوں سے سرمایہ کاری کو مزید راغب کرنے میں مدد ملے گی، روزگار کے مواقع فراہم ہوں گے اور ہندوستان کو عالمی مینوفیکچرنگ مرکز میں تبدیل کیا جاسکے گا۔ معتمد معاشی امور شکتی کانتا داس نے کہا کہ ان تبدیلیوں سے مینوفیکچرنگ شعبہ کو نئی جہت ملے گی اور روزگار کے مواقع فراہم ہوں گے۔ آج کئے گئے فیصلوں میں سب سے اہم شہری ہوا بازی سے متعلق ہے جس میں صدفیصد ایف ڈی آئی کی اجازت دی گئی ہے۔ دفاعی شعبہ میں عصری ٹیکنالوجی تک رسائی کی شرط کو حذف کرتے ہوئے صدفیصد ایف ڈی آئی پالیسی اختیارکی گئی ہے۔ اب نئی شرط کے مطابق عصری یا کسی اور وجوہات کی بناء پر بیرونی کمپنیوں کو سرمایہ کاری کے وسیع تر مواقع رہیں گے۔ اسی طرح حکومت نے غذائی اشیاء کی تجارت میں صدفیصد ایف ڈی آئی کی اجازت دی ہے۔ اس میں ای کامرس بھی شامل ہے۔

TOPPOPULARRECENT