Tuesday , August 22 2017
Home / سیاسیات / مودی عالمی قائد لیکن، ہندوستان کیلئے انتہائی ضروری

مودی عالمی قائد لیکن، ہندوستان کیلئے انتہائی ضروری

انتخابی مہم چلانے پر تنقید، مرہٹواڑہ کے قحط زدہ علاقوں کے دورے کا مشورہ : شیوسینا
ممبئی ۔ 25 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) نریندر مودی پر شمال مشرقی ہند کی ریاستوں میں انتخابی مہم چلانے پر اعتراض کرتے ہوئے شیوسینا نے آج کہا کہ وزیراعظم کو مرہٹواڑہ کے قحط زدہ علاقوں کا دورہ کرنے کیلئے وقت نکالنا چاہئے تھا۔ شیوسینا کے ترجمان سامنا کے اداریہ میں تحریر کیا گیا ہیکہ مودی عالمی قائد بن چکے ہیں۔ وہ دنیا بھر کے دورہ کررہے ہیں۔ اس ملک کے عوام قحط سے پریشان ہیں اور بھوک اور پیاس سے مر رہے ہیں۔ ان کا احساس ہیکہ ہندوستانی عوام کو اسی ملک میں رہنا چاہئے۔ وزیراعظم کو اپنے عوام کی فکر کرنا چاہئے کیونکہ عالمی سیاست سے زیادہ ہندوستان کو ان کی انتہائی ضرورت ہے۔ شیوسینا نے کہا کہ اچھا ہوتا اگر مودی مرہٹواڑہ میں دو روز گذارتے جو شدید قحط سالی کا شکار ہے۔ مودی مغربی بنگال اور آسام میں انتخابی مہم چلا رہے ہیں لیکن مرہٹواڑہ کے عوام نہیں بھولیں گے کہ انہوں نے ان کی چیخیں نہیں سنی۔ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے برسراقتدار مخلوط حکومت کی شریک شیوسینا نے کہا کہ بی جے پی کو خوداحتسابی کرنی چاہئے کہ کنہیا کمار کی ’’تخلیق‘‘ کیلئے کون ذمہ دار ہے۔ کنہیا کمار اتنے قابل نہیں ہے کہ مودی پر تبصرہ کرسکیں لیکن بی جے پی کو خوداحتسابی کی ضرورت ہے کہ ان کی تخلیق کا کون ذمہ دار ہے۔ کنہیا اخبارات کی شہہ سرخیوں میں آ گئے جبکہ انہیں غداری کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے احاطہ میں ایک تقریب منعقد کی گئی تھی جس میں مبینہ طور پر قوم دشمن نعرہ بازی ہوئی تھی۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ قائد حال ہی میں مودی حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے اسے ’’سیلفوں اور جملوں‘‘ حکومت ہے۔ انہوں نے ذات پات پر مبنی تعصب تعلیمی اداروں سے ختم کرنے کیلئے قانون سازی کامطالبہ کیا تھا۔ شیوسینا نے مودی کو یاد دلایا کہ انتخابات سے پہلے انہوں نے کیا وعدے کئے تھے۔ جیسے کہ انہوں نے ملک میں اچھے دن، کالادھن واپس لانے اور ہر سال دو کروڑ ملازمتوں کے مواقع فراہم کرنے کے وعدے کئے تھے لیکن ایک بھی وعدہ اب تک پورا نہیں کیا ہے۔ دریں اثناء شیوسینا کے رکن پارلیمنٹ سنجے راوت نے آج مرکز پر الزام عائد کیا کہ وہ مرہٹواڑہ کے بحران سے درست طور پر نہیں نمٹ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میری اپیل وزیراعظم سے ہے کہ وہ مرہٹواڑہ کا دورہ کریں اور یہاں کی صورتحال کا جائزہ لیں۔ راوت نے بی جے پی پر اتراکھنڈ کے سلسلہ میں ہی تنقید کی اور کہا کہ ملک کی ترقی مرکزی حکومت کی ذمہ داری ہے۔ اسے چھوٹی ریاستوں کے مسائل میں نہیں الجھنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ پسماندہ ریاستیں ہیں ۔ چھوٹی چھوٹی اسمبلیاں رکھی ہیں اور آپ ان ریاستوں کیلئے مشکلات پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ حملے میں شدت پیدا کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سیاست کیلئے ایسا کیا جارہا ہے لیکن یہ آپ کا فرض نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT