Thursday , August 24 2017
Home / ہندوستان / مودی نے بیرونی سرزمین پر پیشرو حکومتوں کو پھر نشانہ بنایا

مودی نے بیرونی سرزمین پر پیشرو حکومتوں کو پھر نشانہ بنایا

ملک کے باہر قدم رکھتے ہی وزیراعظم ذہنی توازن کھو بیٹھتے ہیں،کانگریس کا شدید رد عمل

مسدر/ نئی دہلی ۔ 17 ۔ اگست (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے بیرونی سرزمین پر پیشرو حکومتوں کو پھر ایک بار تنقیدکا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ ماضی میں ’’جوش و خروش کافقدان‘‘ رہا۔ کانگریس نے اس تبصرہ پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ یہ انتہائی بدبختانہ ، ملک کی توہین اور قابل مذمت ہے۔ نریندر مودی نے مسدر سٹی میں یو اے ای کے سرکردہ تاجرین سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ان کی حکومت کو بعض مسائل وراثت میں ملے ہیں اور ان کی اولین ترجیح یہ ہے کہ پہلے وہ کام کئے جائیں جو ماضی کی حکومتوںکی ’’عدم فیصلہ سازی اور جوش و خروش کی کمی‘‘ کے سبب تعطل کا شکار رہے ہیں۔ کانگریس ترجمان آر پی این سنگھ نے دہلی میں ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ جب کبھی وزیراعظم بیرونی سرزمین پر قدم رکھتے ہیں ، ایسا لگتا ہے کہ وہ ذہنی توازن کھو بیٹھتے ہیں۔ نریندر مودی نے اس سے پہلے جرمنی  ،کینیڈا اور چین کے دورہ کے موقع پر بھی اسی طرح کے ریمارکس کئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے بیانات انتہائی بدبختانہ ، ملک کی توہین کے مترادف اور قابل مذمت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیرونی سرزمین پر اپنے ہی ملک کی توہین ناسمجھ قیادت کا ثبوت ہے۔ نریندر مودی کو اس معاملہ میں خصوصی امتیاز حاصل ہوا ہے اور وہ پہلے عالمی لیڈر ہیں جنہوں نے بیرونی سرزمین پر اپنے ہی پیشروں کی ہتک کی اور ہندوستان کے قابل فخر کارناموں کو محض سیاسی جانبداری کی وجہ سے منفی انداز میں پیش کیا۔ آر پی این سنگھ کے پارٹی رفیق سنجے جھا نے ٹوئیٹ کیا کہ بیرونی دوروں پر اپوزیشن پارٹی کے خلاف نریندر مودی اپنی منفی روش برقرار رکھے ہوئے ہیں اور یہ انتہائی افسوسناک ہے۔ پارٹی کے ترجمان م ۔ افضل نے کہا کہ وزیراعظم کو اپنے اعلیٰ عہدہ کا وقار برقرار رکھنا چاہیئے ۔ سابق حکومتوں کو تنقید کا نشانہ بنانے میں کوئی برائی نہیں ہے بشرطیکہ ایسی تنقید اندرون ملک کی جائے لیکن انہیں غیر ملکی سرزمین پر ایسا نہیں کرنا چاہیئے ۔ م۔ افضل نے کہا کہ مودی کیلئے یہ زیب نہیں دیتا کہ داخلی سیاسی مسائل بیرون ملک اٹھائیں ‘ حالانکہ اس بارے میں قبل ازیں بھی اپوزیشن نے ایسی کارروائیوں کی پُرزور مذمت کی ہے ۔م ۔ افضل نے یہ نوٹ کرتے ہوئے کہ وزیراعظم نے تاریخی شیخ زاید جامع مسجد کا دورہ کیا ہے جو دنیا کی تیسری سب سے بڑی مسجد ہے ‘کہا کہ اچھا ہوتا کہ وہ ہندوستان کی مساجد کا بھی دورہ کرتے ۔

TOPPOPULARRECENT