Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / مودی نے 15 لاکھ کا سوٹ پہنا اور عوام کو کیا نظرانداز

مودی نے 15 لاکھ کا سوٹ پہنا اور عوام کو کیا نظرانداز

وزیر اعظم شمال مشرقی ریاستوں پر ناگپور ریموٹ کنٹرول سے حکمرانی کے خواہاں : راہول گاندھی
سیواساگر ( آسام ) 16 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی نے آج ادعا کیا کہ وزیر اعظم نریندر مودی چاہتے ہیں کہ شمال مشرق پر ناگپور کے ریموٹ کنٹرول کے ذریعہ حکومت کی جائے ۔ناگپور میں آر ایس ایس کا ہیڈ کوارٹر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم مودی شمال مشرقی ریاستوں کی دیرینہ روایات امن ‘ کلچر اور تاریخ کو تباہ کرنا چاہتے ہیں۔ اپنے دو روزہ دورہ آسام کے آخری دن یہاں کانگریس کی ایک زبردست ریلی سے خطاب کرتے ہوئے راہول گاندھی نے کہا کہ نریندر مودی چاہتے ہیں کہ منی پور پر یا آسام پر یا اروناچل پردیش پر ناگپور کے ریموٹ کنٹرول کے ذریعہ حکمرانی کریں۔ مودی چاہتے ہیں کہ وہ ان ریاستوں میں امن کی اور کلچر کی روایات اور یہاں کی قدیم تاریخ کو مسمار کیا جائے ۔ شمال مشرقی ریاستوں سے نمٹنے مودی کے طریقہ کار پر تبصرہ کرتے ہوئے راہول نے کہا کہ وزیر اعظم نے ایک دن کانگریس کی صدر سونیا گاندھی کو فون کیا اور انہیں مطلع کیا کہ وہ ناگالینڈ میں ایک تاریخی معاہدہ کرچکے ہیں جو کانگریس پارٹی چالیس برس میں نہیں کرسکی ۔ سونیا گاندھی نے انہیں ( راہول ) ہدایت دی کہ وہ یہ پتہ کریں کہ آسام ‘ ناگالینڈ اور اروناچل پردیش کے چیف منسٹروں کو اس معاہدہ کے تعلق سے مطلع کیا گیا ہے یا نہیں۔ ان تمام ریاستوں کے چیف منسٹروں کو اس کا کوئی علم نہیں تھا ۔ راہول گاندھی نے ادعا کیا کہ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے بھی یہ کہا ہے کہ خود انہیں بھی اس معاہدہ کا کوئی علم نہیں تھا ۔ انہوں نے کہا کہ وہ نہیں جانتے کہ نریندر مودی کیا سوچ رہے ہیں

ور انہیں ناگالینڈ معاہدہ سے کیا حاصل ہوا ہے ۔ وزیر اعظم اگر اپوزیشن کے کسی لیڈر کو فون رکتے ہیں تو ان کے بیان میں کوئی وزن ہونا چاہئے اور اس کی کوئی قدر ہونی چاہئے ۔ مودی نے گذشتہ سال 3 اگسٹ کو مرکزی حکومت اور نیشنل سوشلسٹ کونسل آف ناگالینڈ ( این ایس سی این ) کے ساتھ معاہدہ کا اعلان کیا تھا ۔ راہول گاندھی نے کہا کہ چیف منسٹر آسام ترون گوگوئی نے انہیں بتایا کہ وزیر اعظم نے آسام کا دورہ کرنے سے قبل ریاست کے تعلق سے کوئی معلومات حاصل نہیں کیں۔ در حقیقت وہ ریاست کے تعلق سے کچھ جاننا ہی نہیں چاہتے ۔ وہ یہاں آئے اور اپنے جلسوںم یںکچھ باتیں کہیں اور دہلی واپس چلے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ مودی کا واحد مقصد یہ ہے کہ ان منتخبہ صنعت کاروں کی مدد کریں جو انکے ساتھ ہیں۔ کانگریس اور گوگوئی حکومت ایسا کرنے کی اجازت نہیں دے گی کیونکہ ہم آپ کی تاریخ اور روایات کا احترام کرتے ہیں اور انہیں فروغ دیناچ اہتے ہیں۔ ہم آسام کے نوجوانوں کی مدد کرنا چاہتے ہیں۔ راہول نے کہا کہ کانگریس امن میں اور غریبوں و پسماندہ طبقات کیساتھ کام کرنے میں یقین رکھتی ہے ۔ اس کے برخلاف بی جے پی اور خود وزیر اعظم نے انتخابات کے دوران آسام کے دورے کئے ۔ یہاں تقاریر کیں اور نفرت پھیلائی ۔ مودی نے ہر ہندوستانی کے بینک اکاؤنٹ میں 15 لاکھ روپئے جمع کروانے کا وعدہ کیا تھا لیکن یہ بھی ٹائیں ٹائیں فش ہوگیا اس کے برخلاف مودی نے خود 15 لاکھ روپئے کا سوٹ ذیب تن کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT