Saturday , August 19 2017
Home / سیاسیات / مودی کا وقار انتخابی مہم کے دوران مٹی میں مل گیا

مودی کا وقار انتخابی مہم کے دوران مٹی میں مل گیا

بہار میں انتخابی ناکامی پر نریندر مودی اور امیت شاہ پربی جے پی رکن پارلیمنٹ کی تنقید
پٹنہ 10 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی اور صدر بی جے پی امیت شاہ آج بہار میں انتخابی ناکامی پر تنقید کا نشانہ بن گئے۔ بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ بھولا سنگھ نے اُن پر الزام عائد کیاکہ وہ اُنھوں نے انتخابی مہم کو فرقہ وارانہ رنگ دے دیا تھا۔ انھوں نے کہاکہ ورنہ ریاستی حکومت بی جے پی کی ہوتی۔ غیر اخلاقی زبان استعمال کرنے پر مودی پر تنقید کرتے ہوئے بی جے پی کے سینئر قائد نے کہاکہ وہ آر جے ڈی کے صدر لالو پرساد کے پھندے میں پھنس گئے تھے اور اپنے معیار سے گر گئے تھے جبکہ چیف منسٹر نتیش کمار باوقار برقرار رہے جس کی وجہ سے انھیں تمام طبقوں کے ووٹ حاصل ہوئے۔ بی جے پی قائد نے شرمناک شکست کے بعد مودی پر راست تنقید کرتے ہوئے کہاکہ عوام چاہتے ہیں کہ مودی وزیراعظم کے عہدہ پر برقرار رہنے کے لئے دوبارہ عوام سے رجوع ہوں کیوں کہ عوام اُن میں لالو پرساد کو دیکھ رہے ہیں۔ بھولا سنگھ بیگو سرائے کے رکن پارلیمنٹ ہیں، اس سوال پر کہ کیا مودی اور شاہ نے انتخابی مہم کو تحفظات کا مسئلہ مسلمانوں کے لئے اٹھاتے ہوئے اور پاکستان کا تذکرہ کرتے ہوئے فرقہ وارانہ رنگ دے دیا تھا، انھوں نے کہاکہ یقینا اس کے علاوہ اور کیا کہا جاسکتا ہے۔ گائے اور پاکستان کا مسئلہ انتخابی مہم کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کے لئے ہی اٹھایا گیا تھا۔ انتخابی مہم بہار کی پسماندگی اور اس کی ترقی کے بارے میں ہونی چاہئے تھی لیکن ہم گمراہ ہوگئے اور گڑھے میں گر گئے۔ مودی کا وقار انتخابی مہم کے دوران مٹی میں مل گیا۔ نتیش کمار باوقار برقرار رہے۔ وہ میدان جنگ کے جانور نہیں بنے۔ وزیراعظم لالو پرساد کی گوگلی پر آؤٹ ہوگئے اور اُن کا سب کا ساتھ سب کا وکاس اُن کے لئے گڑھا بن گیا۔ اُنھوں نے لالو کی زبان بولنا شروع کردی۔ بے وقار زبان بولنے کی وجہ سے وہ ناکام رہے جبکہ نتیش کمار نے میدان جنگ میں بھی اخلاق کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا۔ وزیراعظم قوم کا آئینہ ہوتا ہے اُسے قوم کا بھروسہ حاصل ہوتا ہے لیکن جب عوام مودی میں وزیراعظم کو دیکھنے گئے تو اُنھیں اُن کی شخصیت میں لالو نظر آئے اِس لئے وہ نتیش کے پاس گئے جو اب بھی باوقار تھے۔

TOPPOPULARRECENT