Saturday , October 21 2017
Home / شہر کی خبریں / مودی کی دو سالہ حکومت مایوس کن

مودی کی دو سالہ حکومت مایوس کن

ترقی کے بجائے فرقہ پرستی کو بڑھاوا ، ہیومن رائٹس فاونڈیشن
حیدرآباد۔6جون(سیاست نیوز) صدرنشین ہیومن رائٹس فاونڈیشن جیون کمار نے این ڈی اے حکومت کے دوسال کی تکمیل کو غریب عوام کے لئے مایوس کن قراردیتے ہوئے کہاکہ اقتدارحاصل کرنے سے قبل نریندر مودی نے ہندوستان کی عوام سے جو وعدے کئے تھے ان کی تکمیل کے بجائے مذہب ‘ ذات پات کی سیاست کو ترجیح دے رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اچھے دن لانے کے نام پراقتدار حاصل کرنیوالی این ڈی اے حکومت نے گائو رکھشا‘ بھارت ماتا کی جئے جیسے نعروں میں عوام کو الجھانے میں مصروف ہے جب کہ بیرونی سرمایہ کاروں کو پلیٹ فارم کرتے ہوئے ملک کے کارپوریٹ اداروں کو تقویت پہنچانے کے سوائے ان دوسالوں میںنریندر مودی حکومت نے کچھ نہیںکیاہے ۔ انہوں نے دیش بھگتی کے نام پر ملک کے تعلیمی اداروں میں زعفرانیت کو پھیلاکر دلت اور اقلیتی طلبہ کی تعلیم متاثر کرنے والی نریندر مودی حکومت اپنے اچھے کارناموں کی دہائی دیکر معاشی پسماندگی کا شکار ملک کی عوام کو فریب دے رہی ہے ۔جیون کمار نے این ڈی اے حکومت کے دوسالوں کو کسان ‘ مزدور‘ ایس سی ‘ ایس ٹی‘ بی سی اور اقلیتی طبقات کے لئے سب سے زیادہ خطرناک قرار دیا۔ نریندرمودی حکومت کے دوسال اور کارکردگی پر فاونڈیشن اور وعدہ نا توڑ ابھیان کی جانب سے ایک مشترکہ عوامی رپورٹ تیار کی گئی ہے جس کی رسم اجرائی 23مئی کو نئی دہلی میںعمل میں آئی اور اسی رپورٹ کو تلنگانہ کی عوام کے سامنے آج پیش کیاجارہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ وعدہ ناتوڑ ابھیان کے تحت ہم نے ملک کی مختلف ریاستوں میںعوام سے ملاقات کرتے ہوئے موجودہ نریندر مودی کی حکومت کے متعلق رائے حاصل کی ہے۔ عوامی رائے کے مطابق نریندرمودی حکومت اپنے وعدوں کو فراموش کرچکی ہے ۔شریمتی ہیما نے کہاکہ بی جے پی حکومت ملک کی عوام کے لئے نہیںبلکہ ایک مخصوص طبقے کے لئے کام کررہی ہے جس کا مقصد ملک میںنفرت پھیلانا ہے ۔ انہو ںنے کہاکہ مودی حکومت کے اقتدار میں آنے کے بعد ملک کے مختلف مقامات پر دادری جیسے واقعات کے علاوہ گھریلو تشدد‘ خواتین کے ساتھ بدسلوکی اور طلبہ کو ذات اور مذہب کے نام پر ہراساں وپریشان کرنے کے واقعات میںاضافہ ہوا ہے ۔مسٹرتھامس‘ آشا لتا‘ دیوکمار نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔

TOPPOPULARRECENT