Sunday , August 20 2017
Home / ہندوستان / مودی کی رہائش گاہ پر احتجاج کیلئے طلبہ کی کوشش ناکام

مودی کی رہائش گاہ پر احتجاج کیلئے طلبہ کی کوشش ناکام

دہلی میں منڈی ہائوز کے قریب دادری واقعہ کے خلاف احتجاج کرنے والے سینکڑوں گرفتار
نئی دہلی۔11اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) دادری واقعہ کے خلاف وزیراعظم کی رہائش گاہ تک احتجاجی مارچ کی کوشش کرنے والے طلبہ اور مختلف تنظیموں کے جہد کاروں کی کثیر تعداد کو پولیس نے آج یہاں اپنی حراست میں لے لیا۔ ایک سینئر پولیس عہدیدار نے کہا کہ 350-400 طلبہ منڈی ہائوز سے وزیراعظم نریندر مودی کی رہائش گاہ تک احتجاجی جلوس منظم کرنے کی کوشش میں مصروف تھے کہ انہیں فیروز شاہ روڈ پر پولیس نے اپنی حراست میں لے لیا۔ بعد ازاں ان طلبہ کو پارلیمنٹ اسٹریٹ پولیس اسٹیشن کے حوالے کردیا گیا۔ جے این یو، دہلی یونیورسٹی، جامع اسلامیہ اور دیگر تعلیمی اداروں کے علاوہ آل انڈیا اسٹوڈنٹس اسوسی ایشن اور اسٹوڈنٹس فیڈریشن آف انڈیا کے بشمول کئی ملحقہ تنظیموں سے تعلق رکنھے والے کارکنوں نے اترپردیش کے دادری ٹائون میں ہجوم کے ہاتھوں ایک 50 سالہ شخص محمد اخلاق کو مارمار کر ہلاک کئے جانے کے واقعہ کے خلاف بطور احتجاج وزیراعظم کے رہائش گاہ تک جلوس لے جانے اور احتجاجی مظاہرہ کرنے کا منصوبہ بنایا تھا۔

آل انڈیا اسٹوڈنٹس اسوسی ایشن کی رکن عاملہ شہلہ نے کہا کہ ’’پولیس نے ہمیں منڈی ہائوز کے قریب روک دیا جب ہم نفرت کی سیاست اور دادری میں زدوکوب کے ذریعہ ایک شخص کی ہلاکت کے خلاف ہمارا احتجاجی مارچ منظم کررہے تھے۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ ’’دادری واقعہ کے بعد جو کچھ ہوا ہے وہ بھی انتہائی غیر ذمہ دارانہ ہے۔ حکومت میں شامل کئی وزراء نے اشتعال انگیز بیانات دیئے ہیں جنہیں روکا جانا چاہئے۔‘‘ شہلہ نے مزید کہا کہ ’’ہمارے احتجاج کا مقصد دادری کے متاثرین کے لئے انصاف حاصل کرنا اور زدوکوب کے ذریعہ ہلاکت کے اس غیر انسانی واقعہ کے سازشیوں کو کیفر کردار تک پہنچانا ہے۔‘‘ پولیس ذرائع نے کہا کہ ان طلباء کووزیراعظم کی رہائش گاہ کے قریب پہونچنے سے احتیاطی طور پر روک لیا گیا تھا جنہیں چند گھنٹوں کے بعد رہا کردیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT