Monday , October 23 2017
Home / سیاسیات / مودی کی مہربانی ہندوستانی یہودی بھی اقلیتی زمرہ میں شامل ہونگے

مودی کی مہربانی ہندوستانی یہودی بھی اقلیتی زمرہ میں شامل ہونگے

نئی دہلی۔/19اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان میں یہودیوں کی آبادی برائے نام ہے لیکن وزیر اعظم دفتر کی مہربانی سے انہیں بہت جلد اقلیتی موقف عطا کردیا جائیگا۔ وزارت اقلیتی اُمور نے 2ہفتے قبل وزارت قانون و انصاف سے کہاتھا کہ یہودیوں کو اقلیتی حیثیت دینے کیلئے قانونی امکانات تلاش کئے جائیں اور اب پرائم منسٹر آفس نے بھی وزارت قانون کو ہدایت دی ہے کہ اس خصوص میں عاجلانہ کارروائی کی جائے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ہدایت کے پیش نظر یہ کام ترجیحی بنیادوں پر کیا جارہا ہے اور وزارت قانون اندرون ایک ماہ اپنی رپورٹ پیش کردے گی جبکہ جین برادری کو اقلیتی موقف عطا کرنے کے مسئلہ پر قطعی فیصلہ کیلئے 4سال کا عرصہ لگ گیا تھا ، یہ تجویز 2011 میں پیش کرنے پر سال 2014 میں منظوری حاصل ہوئی تھی۔ تاہم وزیر اعظم نریندر مودی کے ماہ جون دورہ اسرائیل کے امکان کے پیش نظر یہودیوں کو اقلیتی موقف عطا کرنے کی کارروائی میں تیزی پیدا کردی گئی ہے جبکہ نریندر مودی مغربی ایشیاء کے ملک کا دورہ کرنے والے ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم ہوں گے اور وہ مجوزہ دورہ کو یادگار بنانا چاہتے ہیں اور اپنے دورہ اسرائیل کے موقع پر یہودیوں کو اقلیتی موقف عطا کرنے کا بطور تحفہ اعلان کرسکتے ہیں۔ دریں اثناء قومی اقلیتی کمیشن کے ذرائع نے بتایا کہ ملک میں یہودیوں کے بارے میں تمام تفصیلات ماہ جنوری میں پی ایم او کو بھیج دی گئی ہے۔ 1950 میں یہودیوں کی قابل لحاظ تعداد اسرائیل منتقل ہوگئی ہے۔ ایک اندازہ کے مطابق 50 ہزار ہندوستانی نژاد یہودیوں نے وہاں سکونت اختیار کرلی ہے۔

TOPPOPULARRECENT