Monday , July 24 2017
Home / Top Stories / مودی کے خلاف احتجاج ، دہلی میں سسوڈیا اور مشرا گرفتار

مودی کے خلاف احتجاج ، دہلی میں سسوڈیا اور مشرا گرفتار

نئی دہلی ۔22 نومبر۔(سیاست ڈاٹ کام) دہلی کے ڈپٹی چیف منسٹر منیش سسوڈیا اور ان کے کابینی رفیق کپل مشرا کو آج پولیس نے اُس وقت گرفتار کرلیا جب وہ مودی حکومت کے خلاف جنتر منتر سے پارلیمنٹ کی جانب مارچ نکالنے کی کوشش کررہے تھے ۔ بڑے نوٹوں کی منسوخی سے متعلق مرکز کے فیصلے پر احتجاج کرتے ہوئے عام آدمی پارٹی کے قائدین نے جیسے ہی مارچ کا آغاز کیا پولیس نے انھیں گھیرے میں لے لیا۔ سسوڈیا نے وزیراعظم مودی پر شدید تنقید کی اور الزام عائد کیا کہ عوام آہ و بکا کررہے ہیں لیکن مودی کو عوام کی اس آہ میں مگرمچھ کے آنسو نظر آرہے ہیں۔ ہم مودی کو پسند نہیں کرتے ، انھوں نے جو کچھ کیا ہے وہ اپنی ذاتی اورسیاسی زندگی کیلئے کیا ہے ۔ یہ نوٹ بندی نہیں نوٹ بدلی ہے ۔ کشمیر میں دہشت گردوں کو اب 2000 روپئے کے نئے نوٹ مل رہے ہیں ۔ آخر یہ نوٹ انھیں کہاں سے حاصل ہورہے ہیں ۔ کیا آپ اس سے ناواقف ہیں ، آپ جانتے ہیں کہ یہ کھیل کس کا ہے ۔ سسوڈیا نے جنتر منتر پر مجمع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مودی ہمیشہ عوام کے سامنے روتے ہوئے عوام کو بھی رُلا رہے ہیں لیکن وہ اپنے مگرمچھ کے آنسو چھپا نہیں سکتے ۔ نوٹوں کی منسوخی کا فیصلہ فوری واپس لیا جانا چاہئے ۔ عوام بھی یہی چاہتے ہیں کہ اُن کی محنت کی کمائی ، اُن کے ہاتھوں میں رہے ۔ ان کے احتجاج میں کابینی رفیق گوپال رائے ، کپل مشرا اور ستندر جین بھی شامل تھے ۔ نوٹوں کی منسوخی کے بعد بھی نہ تو دہشت گردی رُکی ہے اور نہ جعلسازی ختم ہوئی ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT