Thursday , September 21 2017
Home / دنیا / ’موساک فونسیکا ہیکنگ کا نشانہ بنی‘: رامون

’موساک فونسیکا ہیکنگ کا نشانہ بنی‘: رامون

پناماسٹی۔6 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) پاناما کی لا کمپنی موساک فونسیکا کے شریک بانی کا کہنا ہے کہ ان کی کمپنی ہیکنگ کا نشانہ بنی ہے۔کمپنی کے شریک بانی رامون فونسیکا کہنا ہے کہ معلومات کے افشا ہونے میں اندرونی ہاتھ نہیں ہے اور کمپنی کو بیرون ملک قائم سرورز کے ذریعے سے ہیک کیا گیا ہے۔کمپنی نے پاناما کے اٹارنی جنرل کے دفتر میں ہیکنگ کی شکایت درج کرا دی ہے۔کروڑوں دستاویزات کے منظر عام پر آنے کے بعد متعدد ممالک کے طاقتور اور امیر افراد کی ممکنہ مالی بے ضابطگیوں کی تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔کمپنی کے بانی شراکت داروں میں سے ایک فونسیکا نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا: ’ہم حیران ہیں کہ کسی نے بھی یہ نہیں کہا کہ یہاں جرم ہوا ہے۔‘اْنھوں نے اے ایف پی نیوز ایجنسی کو بتایا کہ ’دنیا پہلے ہی اِس بات کو قبول کر رہی ہے کہ رازداری انسانی حق نہیں ہے۔‘اطلاعات ہیں کہ گذشتہ ہفتے کمپنی کی جانب سے اپنے صارفین کو ای میل بھیجی گئی تھی کہ ’ہمارے ای میل سرور میں غیرقانونی طریقے سے خلل اندازی کی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT