Thursday , September 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / موسلادھار بارش نے شہر گلستان بنگلورکو پانی پانی کردیا

موسلادھار بارش نے شہر گلستان بنگلورکو پانی پانی کردیا

۔100 سے زائد نشیبی محلے زیر آب، شہر کی اہم سڑکوں پر تقریباً تین فیٹ پانی

بنگلورو۔16اگسٹ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز):شہر میں کل رات ہوئی غیر معمولی بارش کے سبب شہر کے بیشتر نشیبی علاقے زیر آب آگئے، یوم آزادی تقریبات شاندار پیمانے پر منانے کی تیاریوں میں مصروف شہریان بنگلور کو بارش نے زبردست جھٹکا دیا۔ صبح کے وقت آزادی کے جلسے میں مصروف ہونے کی بجائے لوگوں کو اپنے گھروں میں گھس آئے پانی کو باہر نکالتے دیکھا گیا۔ شہر کے مختلف علاقوں میں 300 سے زائد محلوں میں پانی گھسنے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ پانی بھر جانے کے سبب گھروں میں پھنسے لوگوں کو باہر نکالنے فائر فورس اور سیول ڈیفنس کے جوانوں کو کشتیاں استعمال کرتے ہوئے دیکھا گیا۔ شیواجی نگر ، آڈگڈی پولیس کوارٹرس ، اتر ہلی ، ناگر بھاوی ، این جی ای ایف لے آؤٹ ، الال ، میجسٹک ، کے آر مارکیٹ کے علاوہ دیگر نشیبی علاقوں میں پانی گھس آنے کے سبب لوگ صورتحال سے نمٹنے میں بی بی ایم پی کی ناکامی کو کوستے دیکھے گئے۔ شہر کے شانتی نگر میں آنے والے کینگل ہنومنتیا روڈ( ڈبل روڈ) پر دو فیٹ سے زیادہ پانی جمع ہوگیا جس کی وجہ سے یہاں پر ٹریفک نظام پوری طرح درہم برہم ہوگیا۔ کننگھم روڈ پر بھی صورتحال ایسی ہی تھی، یہاں فورٹیس اسپتال کے قریب دو تا تین فیٹ پانی جمع ہوگیا، جس کی وجہ سے اس سڑک پر بھی ٹریفک متاثر ہوئی۔ ہر بارش میں زیر آب آنے والا شیشادری روڈ کا ریلوے انڈر برڈج کل بھی زیر آب آگیا ۔ اس کے علاوہ آنے پالیہ ، جے پی نگر ، کستوری نگر ، ہبال ، آر ٹی نگر، اور دیگر علاقوں میں اپارٹمنٹس اور گھروں میں پانی گھس آنے کے سبب پارکنگ لاٹ میں کھڑی گاڑیوں کو بھاری نقصان پہنچا۔ صبح تک بھی بہت سارے علاقوں میں پانی یونہی جمع رہا۔ اس کے علاوہ عموماً مصروف ترین سڑکوں الیکٹرانک سٹی، مڑیوال مین روڈ، وی وی کے اینگار روڈ، کے آر پورم مین روڈ ، وغیرہ میں بھی دو فیٹ سے زیادہ پانی جمع ہوگیا تھا۔ یڈیور علاقہ میں تالاب کے روبرو موجود لے آؤٹ میں پندرہ فیٹ سے زیادہ پانی جمع ہوگیا ، جسے فائر فورس نے خالی کیا۔ شہر کے فیلڈ مارشل مانک شا پریڈ گراؤنڈ میں جہاں پر یوم آزادی تقریبات کا اہتمام کیا گیا وہ پورا کیچڑ آلود ہوگیا۔ فوری طور پر اس میدان کے کچھ حصہ کو استعمال کے قابل بنایا گیا۔ رات بھر نشیبی علاقوں میں پانی نکالنے اور لوگوں کو راحت رسانی کیلئے فائر سرویس اور سیول ڈیفنس جوانوں کے ساتھ بی بی ایم پی کی 9 ٹیمیں کا م کرتی رہیں۔ پمپ کے ذریعہ نشیبی علاقوں سے پانی کی نکاسی رات بھر جاری رہی۔میئر جی پدماوتی نے بذات خود صورتحال کی نگرانی کی اور بی بی ایم پی افسران اور عملے کو ساتھ لے کر عوام کو راحت رسانی کیلئے مصروف رہیں۔ کل دیر رات ہی جے سی روڈ پر واقع کمار گنڈی علاقہ میں پانی کی نکاسی کی نگرانی کرتے ہوئے میئر نے اخباری نمائندوں کو بتایاکہ محکمۂ موسمیات نے بتایا ہے کہ رات تین بجے شروع ہونے والی بارش صبح پانچ بجے تک دس سنٹی میٹر ریکارڈ کی گئی جو کہ اپنے آپ میں ایک ریکارڈ ہے۔ شہر بنگلور میں اگست کے دوران اتنی بارش کا ریکارڈ ماضی قریب میں موجود نہیں۔ انہوںنے بتایاکہ شہر کے مہادیو پورہ کے آر پورم ، ایچ ایس آر لے آؤٹ اور بنرگٹہ علاقوں میں 11 سنٹی میٹر سے زیادہ بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔ اس دوران بتایاجاتاہے کہ بارش کے سبب میسور کے گاندھی نگر کی لڈکر کالونی میں ایک چالیس سالہ شخص کی موت ہوگئی، اس سلسلے میں این آر پولیس نے جائے وقوع کا دورہ کیا۔ رام نگرسے ملی اطلاع کے مطابق یہاں بھی موسلادھار بارش کے سبب یہاں کا ضلع اسٹیڈیم جہاں پر یوم آزادی تقریبات کا اہتمام ہونا تھا زیر آب آگیا۔ خلیج بنگال میں ہوا کے کم دباؤ کے سبب تملناڈو ، کیرلا اور کرناٹک میں زور دار بارش ہوئی ہے۔ محکمۂ موسمیات کے ڈائرکٹر سرینواس ریڈ ی نے بتایاکہ کل ہوئی بارش بنگلور اور میسور کے درمیانی خطہ تک ہی محدود رہی ۔آنے والے دودنوں میں یہ ریاست کے دیگر علاقوں میں بھی زور پکڑ سکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT