Saturday , October 21 2017
Home / Top Stories / موسلا دھار بارش سے حیدرآباد ایک بار پھر پانی پانی

موسلا دھار بارش سے حیدرآباد ایک بار پھر پانی پانی

 

٭ عام زندگی درہم برہم ۔ کئی اہم سڑکیں اور ٹریفک جنکشن جھیلوں میں تبدیل
٭ پرانے شہر کے عوام کو کئی مشکلات کا سامنا ۔ کئی مکانات میں پانی داخل ‘ برقی منقطع
٭ مادھاپور میں پانی دوکانوں میں داخل ہوگیا ۔ کئی مقامات پر ٹریفک کا رخ تبدیل

حیدرآباد 7 اکٹوبر ( سیاست نیوز ) شہر حیدرآباد آج ایک بار پھر موسلادھار اور طوفانی بارش سے پانی پانی ہوگیا ۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں سر شام شروع ہوئی بارش نے رات دیر گئے تک وقفہ وقفہ سے اپنا سلسلہ جاری رکھا جس کے نتیجہ میں عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ۔ حالانکہ گذشتہ پانچ دن قبل ہوئی بارش کے برخلاف آج کی بارش میں قدرے وقفہ بھی رہا اور کچھ دیر کیلئے اس کی شدت اور تسلسل میں کمی بھی آئی لیکن اس کا اثر تقریبا وہی رہا جو چند دن قبل کی بارش کا رہا تھا ۔ آج بھی شہر کے تقریبا تمام علاقوں میں اور شہر کے مضافاتی علاقوں میں شدت کی بارش نے اپنا قہر جاری رکھا ۔ بارش کی وجہ سے عام زندگی متاثر ہوکر رہ گئی ۔ جہاں کئی علاقوں میں پانی جمع ہوگیا تھا وہیں برقی سربراہی منقطع ہوگئی ۔ سڑکوں پر بے شمار مقامات پر پانی جمع ہوگیا ۔ ٹریفک نظام درہم برہم ہوکر رہ گیا اور ایک طرح کی افرا تفری کی کیفیت پیدا ہوگئی تھی ۔ عصر کے بعد سے بارش کا سلسلہ شروع ہوا تھا جو رات تک جاری رہا ۔ کچھ دیر کے وقفہ کے بعد نصف شب کے بعد سے ایک بار پھر بارش کا سلسلہ شروع ہوگیا تاہم نصف شب کے بعد ہونے والی بارش اوسط تھی ۔ چونکہ شام سے رات تک موسلادھار بارش ہوئی تھی اس کے نتیجہ میں رات دیر گئے ہونے والی بارش سے بھی مشکلات میں مزید اضافہ ہی ہوا ہے ۔ آج بہادر پورہ منڈل میں سب سے زیادہ بارش ہوئی ۔ یہاں 92.5 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی جبکہ آصف نگر منڈل میں 52.5 ملی میٹر ‘ چارمینار میں 51.5 ملی میٹر ‘ عنبرپیٹر میں 49 ملی میٹر ‘ نارائن گوڑہ میں 48 ملی میٹر بارش ہوئی ۔ سب سے کم بارش گولکنڈہ منڈل میں ریکارڈ ہوئی ۔ یہاں 23 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ۔ بارش کے نتیجہ میں پرانے شہر میں ایک بار پھر عوام کو شدید مسائل کا سامنا کرنا پڑا ۔ کئی مقامات پر اور خاص طورپر نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہوجانے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ اپو گوڑہ ‘ چھتری ناکہ میں کئی مقامات پر پانی جمع ہوگیا تھا ۔ دارالشفا اور دبیر پورہ کے علاقوں میں پہلی مرتبہ بارش کا پانی جمع ہونے کی اطلاعات ملی ہیں۔ کئی مقامات پر پانی جمع ہونے کے نتیجہ میں ٹریفک کا رخ موڑ دیا گیا تھا اور اس کے نتیجہ میں ٹریفک کی آمد و رفت میں خلل پیدا ہوا اور راہگیروں کو مشکلات پیش آئیں۔

کئی مقامات پر گاڑیاں پانی میں ڈوبنے کی وجہ سے فیل ہوگئیں اور اس وجہ سے بھی عوام کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔ جامع مسجد جی ایم چھاؤنی کے روبرو پانی جمع ہوگیا ۔ مادھاپور جیسے علاقہ میں کئی دوکانوں میں بارش کا پانی داخل ہوگیا تھا ۔ رام نگر میں کئی مقامات پر پانی جمع ہوگیا ۔ بہادر پورہ منڈل میں سب سے زیادہ بارش کی وجہ سے بہادر پورہ اور کشن باغ کی مختلف بستیوں میں پانی گھس جانے کی اطلاعات ملی ہیں۔ اسی طرح انجن باؤ لی جنکشن پر بھی پانی جمع ہوگیا تھا ۔ چندرائن گٹہ چوراہا ‘ ہاشم آباد پر بھی پانی جمع ہوگیا تھا ۔ یاقوت پورے ریلوے برج کے نیچے آج تقریبا پانچ فیٹ تک پانی جمع ہونے کی اطلاع ملی ہے ۔ سکندرآباد کے بھی کئی علاقوں میں بارش کی وجہ سے سڑکیں جھیل میں تبدیل ہوگئیں۔ اہم چوراہوں اور ٹریفک جنکشنوں میں پانی جمع ہوجانے سے ٹریفک میں خلل پیدا ہوا اور عوام کو مشکلات پیش آئیں۔ بلدیہ کی جانب سے اپنے تمام عہدیداروں کو مزید بارش کی پیش قیاسی کے پیش نظر چوکس رہنے کی ہدایات دی گئیں ہیں۔ اس کے علاوہ محکمہ پولیس سے بھی خواہش کی گئی ہے کہ شدت کی بارش کی صورت میںنشیبی علاقوں سے پانی کی نکاسی میں مدد کیلئے تیار رہیں۔ جنگم میٹ ‘ چھتری ناکہ ‘ اپوگوڑہ کے جن علاقوں میں پانی جمع ہوا تھا وہاں متعلقہ عہدیداروں کو زیادہ چوکس رہنے کی ہدایت دی گئی ہے ۔ ہاشم آباد ‘ یرہ کنٹہ اور الجبیل کالونی میں ایمرجنسی اسکواڈ کو متعین کردیا گیا ہے ۔ تالاب کٹہ ‘ امان نگر ‘ نشیمن نگر اور دیگر نشیبی علاقوں میں بھی گھروں میں پانی داخل ہوجانے کی اطلاعات ملی ہیں اور مکینوں کو گھروں سے پانی پھینکتے دیکھا گیا ۔ عوام نے پانی کی نکاسی میں بلدیہ سے مدد نہ ملنے کی شکایت بھی کی ہے ۔ شدت کی بارش کی وجہ سے چندرائن گٹہ ‘ فلک نما ‘ علی آباد ‘ لال دروازہ ‘ چھتری ناکہ ‘ بہادر پورہ ‘ کشن باغ ‘ حسینی علم ‘ تالاب کٹہ ‘ امان نگر اے ‘ امان نگر بی ‘ سنتوش نگر ‘ سعید آباد ‘ ملک پیٹ ‘ افضل گنج ‘ بشیر باغ ‘ عطا پور ‘ کوٹھی ‘ عابڈز ‘ ٹولی چوکی ‘ مہدی پٹنم ‘ ملے پلی ‘ نامپلی ‘ مشیر آباد ‘ چکڑ پلی ‘ نارائن گوڑہ ‘ سکندرآباد ‘ ماریڈ پلی ‘ بوئن پلی ‘ پیراڈائز سرکل ‘ کارخانہ علاقوں میں بھی شدت کی بارش کی وجہ سے عام زندگی درہم برہم ہوکر رہ گئی ۔ مہدی پٹنم ‘ ٹولی چوکی ‘ کوٹھی ‘ پیراڈائز ‘ دلسکھ نگر ‘ ٹولی چوکی ‘ لکڑی کا پل علاقوں میں ٹریفک بھی بری طرح متاثر ہوئی ہے ۔ بارش کی وجہ سے شہر میں کئی مقامات پر بھی منقطع ہوگئی تھی اور اس کی بحالی میں عہدیداروں کو مشکلات پیش آئیں۔

 

 

TOPPOPULARRECENT