Saturday , August 19 2017
Home / جرائم و حادثات / موٹر گاڑیاں غلط جگہ کھڑی کرنے پر جیل

موٹر گاڑیاں غلط جگہ کھڑی کرنے پر جیل

شہر میں پارکنگ کی جگہ کا مسئلہ ‘ ٹریفک پولیس کے سخت اقدامات

حیدرآباد ۔ 17مارچ ( سیاست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں موٹر گاڑیوں کی پارکنگ کا مسئلہ دن بہ دن نازک ہوتا جارہا ہے ۔ ٹریفک کے بہاؤ میں رکاوٹ بننے والی سڑک کے کنارے ٹہری گاڑیوں کے خلاف کارروائی کرنے کیلئے پولیس نے سخت اقدامات شروع کئے ہیں ‘ جو گاڑی غلط جگہ پارک کی جائے تو موٹر کے مالک کو جیل کی سزا دی جائے گی ۔ حیدرآباد  ٹریفک پولیس نے فیصلہ کیا ہے کہ نئے اصول و قواعد کے مطابق متواتر خلاف ورزی کرنے والوں کو ’’ سزا ‘‘ دی جائے گی ۔ اگر کوئی بھی موٹر راں اپنی گاڑی کسی ناموزوں مقام پر کھڑا کرے گا تو اس  کیلئے خطرہ ہے ۔ شہر میں کسی بھی مقام پر اگر کسی موٹر راں نے اپنی گاڑی  دوسری سواریوں کیلئے رکاوٹ بنتی ہے اور اس گاڑی کو بے ڈھنگے پن سے سڑک پر ٹہرایا گیا ہے تو اسس طرح متواتر تین دفعہ خلاف ورزی کرنے والے کو جیل کی سزا دی جائے گی ۔ شہریوں میں بیداری پیدا کرنے کیلئے ٹریفک پولیس نے موٹر رانوں سے خواہش کی ہے کہ وہ اپنی گاڑیوں کو پارکنگ جگہ پر ہی ٹہرایا کریں ۔ سڑک کے کنارے بے ترتیب سے گاڑیاں ٹہرانے سے دیگر سواریوں کو مشکلات پیش آتی ہیں ۔ غلط جگہ پر غلط طریقہ سے پارکنگ کے باعث ہی آئے دن سڑک حادثے ہورہے ہیں ۔ ایڈیشنل کمشنر پولیس ٹریفک جیتندر نے کہا کہ ہم نے ایسے لوگوں کی نشاندہی کرنا شروع کی ہے جو جرمانے کی رقم ادا کرنے کی پرواہ نہیں کرتے اور ٹریفک اصولوں کو توڑنے کے عادی بن جاتے ہیں ۔ سڑک پر دوسروں کا خیال کئے بغیر من مانی کرتے ہیں ‘ جہاں دل چاہا اپنی گاڑی پارک کردیتے ہیں ‘ پارکنگ سے متعلق خلاف ورزیوں کے علاوہ ٹریفک پولیس نے تیز رفتاری سے گاڑی چلانے ‘ سگنل توڑنے اور سیل فون پر ڈرائیونگ کرنے والوں کے خلاف بھی سخت کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اب تک پولیس اس طرح کی خلاف ورزیوں پر چالان چاری کرتی تھی لیکن اب چارج شیٹ داخل کر کے عدالتوں سے سزا تجویز کرنے کی اپیل کی جائے گی ۔ اس وقت موٹر رانوں کی غلط پارکنگ کرنے پر 200 تا 1000 روپئے کے درمیان جرمانہ کیا جاتا ہے ۔ ہر ماہ پارکنگ کی خلاف ورزیوں پر زائد از دو لاکھ چالان جاری کئے جاتے ہیں لیکن اب جیل بھیجا جائے گا ۔

TOPPOPULARRECENT