Tuesday , September 19 2017
Home / Top Stories / مکمل ذہنی یکسوئی کیساتھ اصلاحات پر توجہ کی ضرورت

مکمل ذہنی یکسوئی کیساتھ اصلاحات پر توجہ کی ضرورت

حکمرانی کا انداز بدل چکا ہے اور انتظامیہ رشوت پر کنٹرول : ارون جیٹلی
وشاکھاپٹنم 10 جنوری (پی ٹی آئی) مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی نے کہا ہے کہ ملک میں سرمایہ کاری اور ترقی کے فروغ کے لئے حکومت بھرپور ذہنی یکسوئی کے ساتھ توجہ مرکوز کرتے ہوئے ان اصلاحات کو جاری رکھے گی جن پر پیشرفت میں وہ حالیہ چند ماہ کے دوران ناکام رہی ہے۔ جیٹلی نے یہاں سی آئی آئی پارٹنرشپ چوٹی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ’’اگر (ہندوستان کو) فی الواقعی ترقی کرنا ہے تو یہ ظاہر ہے کہ ہماری عوامی و خانگی سرمایہ کاری میں اضافہ کرنا ہوگا۔ ہماری چند اصلاحاتجن پر گزشتہ چند ماہ کے دوران پیشرفت نہیں ہوسکی ہے ان پر مکمل ذہنی یکسوئی کے ساتھ توجہ مرکوز کرنا ہوگا‘‘۔ چند اہم اصلاحات میں گڈس اینڈ سرویس ٹیکس بُل بھی شامل ہے جن پر حکومت پیشرفت نہیں کرسکی۔ یہ بل کانگریس کی شدید مخالفت کے سبب راجیہ سبھا میں لیت و لعل کا شکار بنی ہوئی ہے۔ جیٹلی نے ریاستوں پر زور دیا کہ وہ سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے لئے صنعت و تجارت کے عمل کو آسان بنائیں اور کہاکہ تاجرین، صنعتکار و سرمایہ کار اسمارٹ (سمجھدار اور ذہین) افراد ہوتے ہیں اور پالیسیوں میں استحکام کے علاوہ کاروبار کے لئے دوستانہ فضاء کی طرف دیکھتے ہیں۔ آندھراپردیش کو اس کی دوبارہ تعمیر کے لئے ممکنہ مدد کا تیقن دیتے ہوئے جیٹلی نے اُمید ظاہر کی کہ یہ ریاست (آندھراپردیش) اپنی پالیسیوں اور قائد چیف منسٹر این چندرابابو نائیڈو کی صلاحیتوں کی بنیاد پر سرمایہ کاری کو راغب کرے گی۔ وزیر فینانس نے کہاکہ ’’حکمرانی کا انداز اور نوعیت بدل چکی ہے۔ انتظامیہ بڑی حد تک رشوت سے پاک و صاف ہوچکا ہے۔ فیصلہ سازی بھی سریعیت اختیار کرچکی ہے۔ کاروبار کو آسان بنانا لازماً پالیسی اور انتظامی مسئلہ ہوتا ہے‘‘۔ ترقی کے فروغ کے لئے تمام سطحوں پر تیز رفتار اصلاحات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے جیٹلی نے کہاکہ دنیا ایک انتہائی دشوارکن اور امتحانی مرحلہ سے گزر رہی ہے اور یہ دشواریاں ہمارے انتظامی نظام میں بھی سرائیت کرسکتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT