Tuesday , May 30 2017
Home / ہندوستان / مکمل وقتی وزیر دفاع نہ ہونا قومی سلامتی سے ’کھلواڑ‘

مکمل وقتی وزیر دفاع نہ ہونا قومی سلامتی سے ’کھلواڑ‘

فوجیوں کی ہلاکت حکومت کے ’مینٹل اسکام‘ کا نتیجہ ، شیو سینا کا ردعمل
ممبئی ، 12 مئی (سیاست ڈاٹ کام) شیوسینا نے آج مرکز پر اپنی تنقید میں شدت پیدا کردی کہ مکمل وقتی وزیر دفاع دستیاب نہیں ہے اور مرکز پر قومی سلامتی کے ساتھ ’’کھلواڑ‘‘ کرنے کا الزام عائد کیا۔ سینا نے پارٹی ترجمان ’سامنا‘ کے اداریہ میں کہا کہ وزیر دفاع کی تبدیلی کو تین ماہ ہوچکے ہیں لیکن ابھی تک ہمارے پاس اس وزارت کو پوری طرح سنبھالنے کیلئے کوئی دستیاب نہیں ہے۔ ہندوستان جیسی بڑی قوم کا مکمل وقتی وزیر دفاع نہ رکھنا قومی سلامتی کے ساتھ ’’کھلواڑ‘‘ کے مترادف ہے۔ اداریہ میں کہا گیا کہ اس کیلئے عوام ذمہ دار ہیں کہ ووٹ کے ذریعہ بی جے پی زیرقیادت حکومت کو اقتدار سونپا ہے اور اب سپاہیوں کو عوام کی اس پسند کا خمیازہ بھگتنا پڑرہا ہے۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی کو وزارت دفاع کی اضافی ذمہ داری مارچ میں دی گئی تھی جبکہ منوہر پاریکر نے چیف منسٹر گوا کا نئی ذمہ داری سنبھالنے کیلئے استعفا دیا تھا۔ سینا نے یہ بھی کہا کہ جس طرح سرسری انداز میں سپاہیوں اور کسانوں کے مسائل سے نمٹا جارہا ہے اس سے عیاں ہے کہ یہ حکومت ’’مینٹل اسکام‘‘ کا شکار ہے۔ آج جو لوگ قوم کے مسیحا بن کر گھوم رہے ہیں وہ کسانوں کی بپتا سن پارہے ہیں اور نا ہی سفاکانہ انداز میں ہلاک کئے جانے والے سپاہیوں کے ارکان خاندان کے دکھ درد پر کان دھر رہے ہیں۔ گزشتہ ایک سال میں سپاہیوں کے قتل کو حکومت کی جانب سے قابل مواخذہ قتل انسانی سمجھا جانا چاہئے۔ سینا کی حکومت پر تنقید کا پس منظر نوجوان کشمیر آرمی آفیسر لیفٹننٹ عمر فیاض کی ہلاکت ہے۔ فیاض اپنی کزن کی شادی میں شرکت کی غرض سے سرینگر سے تقریباً 74 کیلومیٹر دور بٹاپورہ گیا تھا جہاں سے اسے منگل کو عسکریت پسندوں نے اغوا کیا۔ اُس کی گولیوں سے چھلنی نعش چہارشنبہ کی صبح پائی گئی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT