Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / مکہ مسجد اور شاہی مسجد کے ملازمین کو رمضان کا تحفہ

مکہ مسجد اور شاہی مسجد کے ملازمین کو رمضان کا تحفہ

تنخواہوں میں اضافہ، دس کروڑ روپئے کا ترقیاتی منصوبہ، ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی نے انتظامات کا جائزہ لیا

حیدرآباد۔ 4۔ مئی  ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے رمضان المبارک کے تحفے کے طور پر مکہ مسجد اور شاہی مسجد کے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کا اعلان کیا ہے ۔ اس اضافی تنخواہ پر عمل آوری جاریہ سال جنوری سے ہوگی۔ اس کے علاوہ حکومت نے مکہ مسجد کے مختلف ترقیاتی کاموں کیلئے دس کروڑ روپئے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ آج مکہ مسجد کا دورہ کیا اور شب معراج کے انتظامات کا جائزہ لیا۔ انہوں نے مکہ مسجد میں ماہ قبل رمضان انتظامات کے بارے میں معلومات حاصل کی اور عہدیداروں کو ہدایت دی کہ گزشتہ سال سے بہتر انتظامات کئے جائیں۔ انہوں نے مسجد کے کارپیٹ اور جانمازوں کی تبدیلی کی ہدایت دی۔ تاہم اس پر رمضان المبارک کے بعد عمل آوری کا امکان ہے۔ انہوں نے حوض کی صفائی اور بیت الخلاؤں کی تعمیر و مرمت پر خصوصی توجہ دینے کی ہدایت دی۔ مسجد کے مکمل معائنے اور مسائل کا جائزہ لینے کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے محمد محمود علی نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے مسجد کے ترقیاتی منصوبے پر عمل آوری میں خصوصی دلچسپی کا اظہار کیا ہے ۔

چیف منسٹر کی ہدایت پر 10 کرو ڑ روپئے پرمبنی پلان تیار کیا گیا ہے جس کی منظوری کے ساتھ ہی عمل آوری کا آغاز ہوگا۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے اس موقع پر حکومت کی جانب سے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کا جی او حوالے کیا ۔ اس جی او کے مطابق ائمہ کی موجودہ تنخواہ کو 11,500 سے بڑھاکر 17,500 کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ 6,700 حاصل کرنے والے ملازمین کو 12,000 روپئے ادا کئے جائیں گے ۔ 8,400 تنخواہ والے ملازمین کو اب 15,000 روپئے تنخواہ ادا کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ائمہ کی تنخواہوں میں مزید اضافہ کی تجویز ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گنبدان قطب شاہی کی تزئین نو کا کام انجام دینے والے آرکیٹکٹ شرد چندرا سے مکہ مسجد ترقیاتی پراجکٹ کی رپورٹ تیار کی گئی ہے اور انہوں نے مسجد کے چھت کی درستگی ، ساؤنڈ سسٹم ، سی سی ٹی وی کیمرے ، الیکٹرکل ورک ، واٹر ڈرینج اور دیگر ضروری کاموں کیلئے 10 کروڑ روپئے پر مشتمل منصوبہ پیش کیا ہے ، اسے چیف منسٹر کو روانہ کیا جائے گا ۔

اس پراجکٹ کی تکمیل سے آئندہ 10 تا 15 برسوں تک مزید کسی کام کی ضرورت نہیں پڑیگی۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے بارش کے سبب مسجد کی چھت میں پانی اترنے اور مٹی گرنے کے واقعات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ مسجد کی چھت پر زائد مقدار میں ڈانبر استعمال کیا گیا جس کی نکاسی کرتے ہوئے عصری انداز میں چھت کا تحفظ کیا جائے گا۔ انہوں نے رمضان المبارک کے دوران بلا وقفہ برقی کی سربراہی اور مصلیان مسجد کیلئے صحن میں پارکنگ کی سہولت فراہم کرنے کی ہدایت دی۔ دورہ کے موقع پر ملازمین نے اپنے مسائل پیش کئے اور ملازمین کی تعداد میں اضافہ کا مسئلہ بھی زیر بحث رہا۔ مسجد کی صفائی کے لئے بڑی مقدار میں کلیننگ میٹریل حوالے کیا گیا ہے۔ مسجد میں ضروری کاموں کی تکمیل کیلئے ہمیشہ 25,000 روپئے اکاؤنٹ میں جمع رکھنے کا فیصلہ کیا گیا کیونکہ حکومت سے رقم کی اجرائی تک وقت لگ سکتا ہے ۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے ہوم گارڈس کی تنخواہوں کی بروقت ادائیگی کیلئے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ تنخواہوں کی رقم کمانڈنٹ ہوم گارڈ کو حوالے کرنے کے بجائے راست طور پر ہوم گارڈس کے اکاؤنٹ میں جمع کردیں۔ عمر جلیل کے مطابق کیمروں کی تنصیب کا کام جلد مکمل کرنے کیلئے وہ حکومت سے درخواست کریں گے۔ سابق میں آرکیالوجیکل سروے آف انڈیا نے 1.75 کروڑ کا منصوبہ پیش کیا تھا۔ اس موقع پر چیف اگزیکیٹیو آفیسر وقف بورڈ محمد اسد اللہ ، برقی بلدی آبرسانی اور وقف بورڈ کے عہدیداروں کے علاوہ ٹی آر ایس قائدین موجود تھے۔
تنخواہوں میں اضافہ کی تفصیلات
حیدرآباد۔ 4۔ مئی  ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے مکہ مسجد اور شاہی مسجد باغ عامہ کے ائمہ مؤذنین اور دیگر ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کیا ہے۔ اس سلسلہ میں جی او آر ٹی 95 جاری کیا گیا۔ اضافی تنخواہ کے احکامات پر یکم جنوری 2016 ء سے عمل آوری ہوگی۔ خطیب اور امام کی موجودہ تنخواہ 11,500 سے بڑھاکر 17,500 کی گئی ہے۔ سپرنٹنڈنٹ اور مینجر و مؤذن کی تنخواہ کو بھی 17,500 کردیا گیا۔ اسٹور کیپر کی تنخواہ 8,400 سے بڑھاکر 15,000 کی گئی۔ الیکٹریشن اور اسسٹنٹ الیکٹریشن کی تنخواہ کو بھی 15,000 کیا گیا ہے۔ اٹنڈر ، سوئیپر اور کاماٹی کی موجودہ تنخواہ 6,700 سے بڑھاکر 12,000 کی گئی ہے۔ ان تمام ملازمین کو جنوری کے بقایہ جات کے ساتھ اپریل کی تنخواہ ادا کی جائے گی۔ حکومت نے اس سلسلہ میں بجٹ بھی جاری کردیا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT