Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / مکہ مسجد دھماکے،9 سال مکمل، شہر میں چوکسی

مکہ مسجد دھماکے،9 سال مکمل، شہر میں چوکسی

متاثرین کو انصاف کا انتظار، خاطی ہنوز آزاد
حیدرآباد 17 مئی (سیاست نیوز) مکہ مسجد بم دھماکہ کے 9 سال مکمل ہونے اور مالیگاؤں بم دھماکہ کیس کی ملزمہ سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو کلین چٹ دیئے جانے کے پیش نظر پولیس نے دونوں شہروں میں سخت چوکسی اختیار کرلی ہے۔ پولیس نے اِس موقع پر سکیوریٹی کے وسیع ترین انتظامات کئے ہیں اور ساؤتھ زون میں 2 ہزار پولیس ملازمین پر مشتمل بندوبست کیا ہے۔ تلنگانہ اسپیشل پولیس کے 30 پلاٹون، ریاپڈ ایکشن فورس کی دو کمپنیوں کے علاوہ ایک ڈپٹی کمشنر پولیس، 5 ایڈیشنل ڈپٹی کمشنران، 4 اسسٹنٹ کمشنران، 50  انسپکٹران، 100 سب انسپکٹران کل بندوبست کے لئے متعین کئے گئے ہیں۔ ایڈیشنل کمشنر آف پولیس کرائمس اینڈ ایس آئی ٹی شریمتی سواتی لکرا کی راست نگرانی میں پولیس بندوبست  کیا گیا ہے۔ 18 مئی 2007 ء کو پیش آئے مکہ مسجد بم دھماکہ کیس میں 5 مصلی جاں بحق ہوگئے تھے جبکہ کئی زخمی ہوگئے تھے۔ پولیس نے بم دھماکہ کے بعد سینکڑوں مسلم نوجوانوں کو فرضی مقدمات میں ماخوذ کیا تھا اور  اُن پر بم دھماکہ کرنے کا الزام عائد کیا تھا جو ہندو دہشت گردوں کی گرفتاری کے بعد غلط ثابت ہوا۔ نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی نے مکہ مسجد بم دھماکہ کیس میں ملوث آر ایس ایس کارکن لوکیش شرما، دیویندر گپتا، نبا کمار سرکار عرف سوامی اسیمانند، بھرت موہن لعل راتیشور عرف بھرت بھائی کو گرفتار کیا تھا۔ لیکن مکہ مسجد بم دھماکہ کیس کے دو کلیدی ملزمین رام چندر کال سنگرا اور سندیپ ڈانگے ہنوز مفرور ہیں اور ان کے سر پر 10 لاکھ روپئے کا انعام بھی رکھا گیا۔ مکہ مسجد بم دھماکہ کیس کی سماعت چوتھے ایڈیشنل میٹرو پولیٹن سیشن جج کے اجلاس پر جاری ہے اور آئندہ ماہ جون میں کیس کا شیڈول دوبارہ طے کیا جائے گا۔ استغاثہ نے اب تک بم دھماکہ کیس کے 72 گواہوں بشمول دو فارنسک ماہرین و بم ڈسپوزل عہدیداروں کے بیانات بھی قلمبند کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT