Tuesday , October 24 2017
Home / ہندوستان / مہاراشٹرا میں بہت جلد ڈانس بارس کا احیاء

مہاراشٹرا میں بہت جلد ڈانس بارس کا احیاء

خواتین کا وقار مجروح نہ کیا جائے۔ سپریم کورٹ کی ہدایت
نئی دہلی؍ممبئی ۔/15اکٹوبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) مہاراشٹرا میں بہت جلد ڈانس بار کا احیاء ہوجائیگا جبکہ سپریم کورٹ نے آج اس شرط پر امتناعی قانون کے نفاذ کے خلاف حکم التواء جاری کیا ہے کہ ڈانس بار میں مخرب اخلاق حرکتیں نہیں ہوں گی۔ تاہم حکومت نے بتایا کہ پابندی برقرار رکھنے کیلئے اصرار کیا جائے گا۔ جسٹس دیپک مصرا اور جسٹس پروفلا چندانپت پرمشتمل ڈیویژن بنچ نے اپنے احکامات میں کہا کہ ہمارے خیال میں مہاراشٹرا پولیس ایکٹ ( دوسری ترمیم ) کے دفعہ 33کے نفاذ پر حکم التواء مناسب ہوگا۔ عدالت کے اس فیصلہ سے ہزارہا بارڈانسرس اور ریسٹورنٹس کو ایک بڑی راحت فراہم ہوگئی۔ تاہم یہ احکامات شرائط کے تابع ہوں گے جس کے مطابق بارڈانس میں کوئی غیر اخلاقی حرکتیں نہیں ہونی چاہیئے اور خلاف ورزی کی صورت میں لائسنسنگ اتھاریٹی کو کارروائی کا اختیار ہوگا تاکہ خواتین کی عزت اور وقار کا تحفظ کیا جاسکے۔ عدالت العالیہ نے انڈین ہوٹل اینڈ ریسٹورنٹ اسوسی ایشن کی عرضی پر قطعی سماعت کی تاریخ 5نومبر مقرر کی اور بتایا کہ اس نوعیت کے مسئلہ پر عدالت سال2013ء میں فیصلہ کرچکی تھی۔ دریں اثناء سپریم کورٹ کے حکم پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فڈنویس نے بتایا کہ بارس اور دیگر مقامات پر خواتین کے رقص کے خلاف پابندی برقرار رکھنے کیلئے عدالت میں اصرار کیا جائے گا کیونکہ حکومت بارڈانس کے احیاء کے حق میں نہیں ہے ۔ واضح رہے کہ حکومت مہاراشٹرا نے سال 2005ء میں ممبئی پولیس ایکٹ میں ترمیم کرتے ہوئے شراب خانوں ( باروں ) میں ڈانس پر پابندی عائد کردی تھی اور یہ عذر پیش کیا تھا کہ بار ڈانس کی وجہ سے فحاشی اور قحبہ گری کی حوصلہ افزائی ہورہی ہے۔ ممبئی ہائی کورٹ نے 12اپریل 2006 کو حکومت کے امتناعی احکامات کو کالعدم کردیا تھا اور بتایا کہ ہر ایک شہری کو اپنی پسند کا پیشہ اختیار کرنے کا دستوری حق ہے جس کے خلاف ریاستی حکومت سپریم کورٹ سے رجوع ہوئی تھی۔
ڈانس بار پر عدالت کے فیصلہ کا خیرمقدم
ممبئی۔/15اکٹوبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندی فلموں کی نامور شخصیتوں مدھور بھنڈارکر، پوجا بھٹ، کونکنا سین شرما نے آج مہاراشٹرا میں ڈانس بار پر عائد امتناع کے خلاف سپریم کورٹ کے فیصلہ کا خیرمقدم کیا ہے جبکہ عدالت نے پابندی کے خلاف اس شرط پر حکم التواء جاری کیا کہ رقص و سرور میں غیر اخلاقی حرکتیں نہ کی جائیں۔ بھنڈارکر جنہوں نے ڈانس بار کے پس منظر میں فلم ’ چاندنی بار ‘ بنائی تھی عدالتی فیصلہ کا خیرمقدم کیا ہے۔ جبکہ فلم پروڈیوسر پرتیش نندی نے یہ توقع ظاہر کی کہ عدالت کے تازہ فیصلہ سے 67ہزار ڈانسرس کی باز آبادکاری کیلئے راہ ہموار ہوگی۔فلمی اداکارہ پوجا بھٹ نے سریم کورٹ کے فیصلہ کو ترقی پسند قرار دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT