Thursday , September 21 2017
Home / سیاسیات / مہاراشٹرا میں مجالس مقامی کے انتخابات میں بی جے پی کا شاندار مظاہرہ

مہاراشٹرا میں مجالس مقامی کے انتخابات میں بی جے پی کا شاندار مظاہرہ

کانگریس اور این سی پی کے طاقتور گڑھ میں داخلہ۔ ایم این ایس کو شکست فاش
ممبئی۔/16ڈسمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) مہاراشٹرا میں بلدی انتخابات کے پہلے راؤنڈ میں حکمران بی جے پی ناقابل تسخیر پارٹی بن کر اُبھری ہے نیم شہری اور دیہی علاقوں میں پارٹی کے شاندار مظاہرہ سے نوٹ بندی کے خلاف اپوزیشن کی بولتی بند ہوگئی کیونکہ اپوزیشن کا یہ ادعا تھا کہ نوٹ بندی کی وجہ سے عوام حکومت سے ناراض ہیں اور مجالس مقامی کے انتخابات میں حکمران جماعت کے خلاف ووٹ دیں گے۔ دوسرے مرحلہ کے انتخابات کے ووٹوں کی گنتی کل شام مکمل کرلی گئی۔ بی جے پی نے میونسپل کونسل اور نگر پنچایتوں میں 974 نشستیں حاصل کیں لیکن یہ نتائج کانگریس، این سی پی کو زبردست جھٹکہ ثابت ہوئے کیونکہ دیہی علاقوں میں عرصہ دراز تک ان جماعتوں کا غلبہ تھا۔ میونسپل کونسل کے صدور کیلئے راست انتخاب کا فیصلہ بی جے پی کیلئے سود مند ثابت ہوا جس نے 56عہدوں پر کامیابی حاصل کی ہے۔ اگرچیکہ یہ پہلے مرحلہ کے انتخابات ہیں بی جے پی نے شاندار مظاہرہ کرتے ہوئے 893 کونسل اور پنچایتوں کی نشستوں پر قبضہ کرلیا ہے لیکن دوسرے مرحلہ میں این سی پی کو81 نشستوں تک محدود کردیا ہے۔ جبکہ حکمران بی جے پی کی حلیف شیوسینا نے پہلے 2 راؤنڈ میں بالترتیب 529 اور 27 نشستیں حاصل کی ہیں۔ اضلاع لاتور اور پونے میں 324کونسلروں اور 14 میونسپل کونسل صدور انتخابات کیلئے چہارشنبہ کو رائے دہی منعقد کی گئی۔ تاہم راج ٹھاکرے کی زیر قیادت مہاراشٹرا نونرمان سینا کو مذکورہ انتخابات میں ہزیمت اٹھانی پڑی۔ انتخابی نتائج نے چیف منسٹر دیویندر فڈ نویس کے موقف کو مزید طاقتور بنادیا ہے جنہوں نے انتخابی مہم کی قیادت کی تھی۔ سیاسی مبصرین کے بموجب علاقہ ودربھا میں بی جے پی کو غیر متوقع کامیابی حاصل ہوئی ہے جو کبھی کانگریس کا طاقتور قلعہ تصور کیا جاتا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ چونکہ فڈنویس کا تعلق ناگپور سے ہے جس کے باعث علاقہ میں بی جے پی کے حق میں لہر چل گئی۔ انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی کی مشکلات سے عوام، بی جے پی کے خلاف نظر نہیں آرہے ہیں کیونکہ انہیں یہ یقین ہے کہ بلیک منی کے خلاف حکومت کے اقدام سے بہت جلد مثبت نتائج برآمد ہوں گے۔ بی جے پی کے ریاستی صدر راؤ صاحب دانوے نے بتایا کہ مجالس مقامی کے انتخابی نتائج سے یہ ثابت ہوگیا ہے کہ عوام، نوٹ بندی کیلئے وزیر اعظم نریندر مودی کے فیصلہ سے اتفاق کرتے ہیں اور مہاراشٹرا میں بی جے پی سرفہرست پارٹی کا موقف برقرار رکھے گی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT