Saturday , August 19 2017
Home / ہندوستان / مہاراشٹرا کی چھوٹی ریاستوں میں تقسیم کا مطالبہ

مہاراشٹرا کی چھوٹی ریاستوں میں تقسیم کا مطالبہ

آر ایس ایس لیڈر پر شیوسینا کی تنقید
ممبئی۔16 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) مہاراشٹرا کو 4 چھوٹی ریاستوں میں تقسیم سے متعلق ریمارکس پر آر ایس ایس کے نظریہ ساز ایم جی ویدیہ کے خلاف طنز کرتے ہوئے شیوسینا نے آج کہا ہے کہ چیف منسٹر دیویندر فڈنویس کو چاہئے کہ انہیں (ویدیہ) ریاست کا سب سے اعلی ایوارڈ مہاراشٹر بھوش دیا جائے۔ پارٹی کے ترجمان سامنا کے اداریہ میں کہا گیا ہے کہ مہاراشٹرا کو چھوٹی ریاستوں میں تقسیم کا مطالبہ کرتے ہوئے آر ایس ایس لیڈر نے اپنا نقطہ نظر پیش کیا ہے جو کہ ہر ایک کو جمہوریت میں حق ہے۔ کئی مرتبہ بعض لوگوں نے پاکستان سے محبت کا بھی اظہار کیا ہے جس میں کوئی قباحت نظر نہیں آئی۔ شیوسینا نے کہا کہ ایم جی ویدیہ کو ممبئی مدعو کرکے ان کے نقطہ نظر پر خراج تحسین پیش کیا جائے اور چیف منسٹر کو چاہئے کہ ایک عظیم نقطہ نظر ظاہر کرنے پر انہیں مہاراشٹرا بھوش کا اعزاز عطا کریں۔ وضح رہے کہ گزشتہ ہفتہ ناگپور میں خطاب کے دوران آر ایس ایس کے سابق ترجمان ویدیہ نے اپنے موقف کا اعادہ کیا تھا کہ مہاراشٹرا کو 4 ریاستوں میں تقسیم کردیا جائے جس کے پیش نظر شیوسینا نے یہ طنزیہ تبصرہ کریا ہے۔ ویدیہ نے کہا تھا کہ میں، ودربھا کا کٹر حامی ہوں اور علیحدہ ریاست ودربھا کا قیام لایا جانا چاہئے۔ کسی بھی ریاست کی آبادی 3 کروڑ سے زائد نہیں ہونی چاہئے اور چھوٹی ریاستوں کے مطالبہ پر احتجاج کی ضرورت نہیں ہے۔ ویدیہ نے ہمیشہ مہاراشٹرا کو ودربھا، مراہٹواڑہ بشمول تھنڈیش اور کونکن اور مغربی مہاراشٹرا میں تقسیم اور مراہن کو سرکاری زبان بنانے کی پرزور وکالت کی ہے۔ انہوں نے یہ بھی تجویز پیش کی کہ ریاستی تشکیل جدید کمیشن کا قیام اور ہر ایک ریاست کی آبادی پر تحدیدات عائد کی جائے۔ تاہم شیوسینا مہاراشٹرا کی تقسیم کے نظریہ کی شدید مخالف ہے۔

TOPPOPULARRECENT