Sunday , August 20 2017
Home / ہندوستان / مہاراشٹرا کے ایڈوکیٹ جنرل مستعفی

مہاراشٹرا کے ایڈوکیٹ جنرل مستعفی

علحدہ ریاستوں کے مطالبہ کی حمایت کا شاخسانہ
ممبئی ۔/22مارچ، ( سیاست ڈاٹ کام )علحدہ ریاست مرہٹواڑہ کے مطالبہ کی حمایت پر تنقیدوں کے پیش نظر مہاراشٹرا کے ایڈوکیٹ جنرل شری ہری انیے نے آج عہدہ سے استعفی دے دیا لیکن انہوں نے متنازعہ بیان پر معذڑت خواہی سے انکار کردیا اور کہا کہ وہ اپنے موقف پر قائم ہیں۔ فڈنویس حکومت نے گزشتہ سال ایڈوکیٹ جنرل کی حیثیت سے شری ہری کا تقرر کیا تھا۔ ان کے متنازعہ ریمارک پر اپوزیشن کانگریس۔ این سی پی اور حکمران تحاد کی حلیف جماعت شیوسینا کی تنقید اور تعریض حتیٰ کہ ریاستی بی جے پی میں اضطراب کے بعد اپنا استعفی آج ریاستی گورنر سی ایچ ودیا ساگر کو پیش کردیا تاہم شری ہری کو ودربھا کے بعض کانگریس قائدین کی تائید حاصل ہوئی ہے کیونکہ انہوں نے علحدہ ودربھا کی تشکیل پر ریفرنڈم کروانے کا مطالبہ کیا۔ ایڈوکیٹ جنرل کا استعفی نامہ پیش کرتے ہی چیف منسٹر نے ارکان اسمبلی کو مطلع کیا کہ گورنر سے کہا گیا کہ یہ استعفی قبول کرلیا جائے۔ بعد ازاں شری ہری انیے (Aney) نے بتایا کہ علحدہ ریاست ودربھا کے مطالبہ کیلئے وہ اپنے موقف پر قائم ہیں جبکہ  مرہٹواڑہ کے عوام کی دیرینہ خواہشات کی تکمیل کی جائے۔ اپوزیشن کے اس مطالبہ پر کہ شری ہری کو معذرت کرنا چاہیئے، انہوں نے کہا کہ میں ہرگز معذرت خواہی نہیں کروں گا۔ اگر علحدہ ریاست ودربھا کیلئے عہدہ کی قربانی دینی پڑی تو میں نے یہ قیمت چکادی ہے۔

TOPPOPULARRECENT