Tuesday , July 25 2017
Home / ہندوستان / مہلوک عسکریت پسندوں کے پاس سے 2000 کے نئے کرنسی نوٹ برآمد

مہلوک عسکریت پسندوں کے پاس سے 2000 کے نئے کرنسی نوٹ برآمد

نئی دہلی ؍سری نگر ، 22 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پانچ سو اور ایک ہزار روپے کے کرنسی نوٹوں کی منسوخی کے بعد ملک میں بھلے ہی لوگوں کو نئے نوٹوں کے لئے گھنٹوں لائن میں لگنا پڑ رہا ہے لیکن وادی کشمیر میں سرگرم عسکریت پسندوں کے ہاتھوں میں نئے نوٹ ضرور پہنچ گئے ہیں۔ شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کے بونی کھن حاجن میں منگل کی صبح سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں مارے گئے دو عسکریت پسندوں کے پاس سے 2000 روپے کے دو نئے نوٹ برآمد ہوئے ہیں۔ تاہم ابھی یہ نہیں پتہ چلا ہے کہ مارے گئے جنگجوؤں کے پاس سے ملے 2000 روپے کے نوٹ اصلی ہیں یا جعلی۔ مارے گئے عسکریت پسندوں کی جو تصویریں جاری کردی گئیں ہیں، ان میں ہتھیاروں اور گولہ بارود کے ساتھ ساتھ 2000 روپے کے دو نئے نوٹ اور 100 روپے کے کئی نوٹ دکھائی دے رہے ہیں۔حکومت کی طرف سے 1000 اور 500 روپے کے نوٹ منسوخ کیے جانے کے بعد عسکریت پسندوں کے پاس سے یہ پہلی برآمدگی ہے جس میں2000 روپے کے نئے نوٹ ملے ہیں۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے گزشتہ آٹھ نومبر کو بڑے نوٹوں کی منسوخی کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ مہم بقول اُن کے دہشت گردوں کو کی جانے والی فنڈنگ، جعلی کرنسی اور کالے دھن پر روک لگانے کے لئے شروع کی گئی ہے ۔گذشتہ ہفتے وزیر دفاع منوہر پاریکر نے دعویٰ کیا تھا کہ پانچ سو اور ایک ہزار روپے کے کرنسی نوٹوں کی منسوخی کے بعد کشمیر میں پتھراؤ کے واقعات میں کمی آئی ہے ۔ دریں اثنا سیکورٹی ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ حاجن میں مارے گئے عسکریت پسندوںکے قبضے سے بھاری مقدار میں اسلحہ و گولہ بارود برآمد کیا گیا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT