Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / ’’ میرا بیٹا بے قصور ہے ‘ ہم اُس کو بچانے کی کوشش کرینگے ‘‘

’’ میرا بیٹا بے قصور ہے ‘ ہم اُس کو بچانے کی کوشش کرینگے ‘‘

دہلی میں گرفتار القاعدہ کے مشتبہ کارکن محمد آصف کے والد کا ردعمل
سنمبل ۔ 18 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : دہلی میں گرفتار شدہ القاعدہ کے مشتبہ کارکن کے والد نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کا بیٹا بے قصور ہے ۔ جس کو بچانے کے لیے خاندان اپنی کوشش کرے گا ۔ القاعدہ سے روابط کے شبہ پر گرفتار محمد آصف کے والد عطا الرحمن نے کہا کہ ’’ میرا بیٹا دہلی سے کپڑے لاکر یہاں فروخت کرتا ہے ۔ وہ زیادہ پڑھا لکھا نہیں ہے اور کبھی کسی سے کوئی جھگڑا نہیں کیا ۔ ہم کس طرح کہہ سکتے ہیں کہ وہ القاعدہ سے ربط رکھتا ہے ۔ میرا بیٹا دہشت گرد نہیں ہوسکتا ‘‘ ۔ دہلی پولیس نے اس ہفتہ کے اوائل میں القاعدہ کے دو مشتبہ کارکنوں کو گرفتار کرتے ہوئے یہ دعویٰ بھی کیا تھا کہ اُس نے برصغیر کے ایک دہشت گرد گروپ کو بے نقاب کردیا ہے جو ملک کے باہر سے اپنی سرگرمیاں چلا رہا تھا ۔ 41 سالہ محمد آصف کو شمال مشرقی دہلی کے علاقہ سیلم پور سے اور 37 سالہ عبدالرحمن کو اڈیشہ میں کٹک کے علاقہ جگت پور سے گرفتار کیا گیا تھا ۔ پولیس کے مطابق دوران تحقیقات پتہ چلا کہ محمد آصف کا تعلق اترپردیش کے ضلع سنمبل کے تحت دیپا سرائے محلہ سے ہے جہاں سے 17 دسمبر کو اس ضمن میں ایک شخص ظفر مسعود کو گرفتار کیا گیا تھا ۔ عطا الرحمن نے اصرار کیا کہ ’’ میرا بیٹا بے قصور ہے اور ہم اُس کو بچانے کی کوشش کریں گے ‘‘ ۔ آصف کے ایک چھوٹے بھائی نے بھی اس کی پر زور دفاع کی اور کہا کہ وہ ( آصف ) ایک مرتبہ سعودی عرب گئے تھے اور اس کے بعد انہوں نے رقم کا انتظام کرنے کے لیے اپنے مکان کا کچھ حصہ فروخت کردیا تھا ‘ ۔ سنمبل کے پولیس سپرنٹنڈنٹ اتل سکسینہ نے کہا ہے کہ ’’ اڈیشہ اور دہلی میں ان گرفتاریوں کے بعد اترپردیش میں چوکسی اختیار کرلی گئی ہے ‘‘ ۔ انہوں نے کہا کہ ’’ فیکٹریوں میں ورکرس کی تنقیح اور مختلف مقامات پر تلاشی مہم شروع کرنے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں ‘‘ ۔ باور کیا جاتا ہے کہ برصغیر میں القاعدہ کا امیر اور نوجوانوں کو ترغیب دینے اور رکن بنانے سے متعلق شعبہ کے بانی ارکان میں شامل ہے ۔ برصغیر ہند میں القاعدہ کا ایمن الظواہری نے 2014 میں قیام عمل میں لایا تھا ۔ افغان پاک سرحد پر منعقدہ مجلس شوریٰ کے اجلاس کاملہ میں اس تنظیم کے قیام کے موقع پر الظواہری کا داماد بھی شریک تھا ۔۔

TOPPOPULARRECENT