Wednesday , August 23 2017
Home / سیاسیات / میرا کوئی فیشن ڈیزائنر نہیں ہے : مودی

میرا کوئی فیشن ڈیزائنر نہیں ہے : مودی

’معمولی پس منظر سے اُبھرا ہوں لیکن اچھے کپڑے پہنتا ہوں‘
نئی دہلی 4 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم مودی نے ، جن کے لباس کا اسٹائیل اور بن ٹھن کر رہنے کا انداز ہمیشہ ہی مرکز توجہ رہا ہے، آج کہاکہ ملبوسات بشمول ان کے ٹریڈ مارک نیم آستین کرتا کی تیاری کے لئے ان کے پاس کوئی فیشن ڈیزائنر نہیں ہے۔ وزیراعظم مودی نے یوم اساتذہ کے موقع پر طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ’’یہ محض افواہیں ہیں کہ میرے پاس کوئی فیشن ڈیزائنر ہے۔ میں سیدھا سادہ لباس پہنتا ہوں‘‘۔ یہ ریمارک انھوں نے اس موقع پر کیا جب بعض طلبہ نے ان کے منفرد انداز کے لباس کو پسند کیا تھا۔ طلبہ نے مودی سے دریافت کیاکہ آپ مودی کرتا کے بارے میں کیا کہیں گے جو کافی مقبول ہوا ہے جس پر اُنھوں نے جواب دیا کہ میں ایک معمولی پس منظر سے اُبھرا ہوں۔ گجرات میں آب و ہوا زیادہ سرد نہیں ہے۔ چنانچہ میں کرتا پائجامہ پہنتا تھا۔ میں اپنے کپڑے خود دھویا کرتا تھا۔ پورے آستین کے کرتے دھونے میں دشواری ہوتی تھی چنانچہ میں نے کام آسان بنانے کے لئے نیم آستین کرتے کا استعمال شروع کیا تھا‘‘۔ لیکن اب مودی کرتا کافی مقبول ہوچکا ہے۔ کئی مشہور شخصیات نے بالخصوص حکمراں جماعت کے اکثر قائدین یہی کرتا پہننے لگے ہیں۔ مودی نے بچوں کو صاف ستھرا رہنے اور خوش لباسی کی ترغیب دیتے ہوئے کہاکہ ’’بچپن میں میرے پاس کپڑوں کی استری کروانے کیلئے پیسے نہیں رہا کرتے تھے اور میں ’’لوٹے‘‘ میں کوئلہ ڈال کر اپنے کپڑوں کی استری بنایا کرتا تھا اور کینوس جوتوں کی پالش کیلئے ’’چاک پیس‘‘ کا استعمال کرتا تھا۔ اُنھوں نے کہاکہ ’’کلاس ختم ہونے کے بعد میں ’چاک پیس‘ کے چھوٹے ٹکڑے جمع کیا کرتا تھا اور ان سے اپنے جوتے چمکاتا تھا‘‘۔ اُنھوں نے بچوں کو مشورہ دیا کہ ’’موقع کے لحاظ سے صاف ستھرے کپڑے زیب تن کرنا چاہئے اور خوش پوش نظر آنا چاہئے۔ میں بھی یہی کرتا ہوں لیکن میرے پاس کوئی فیشن ڈیزائنر نہیں ہے‘‘۔

اچھے اور باصلاحیت افراد کے سیاست میں داخلہ پر زور
ملک میں سیاسی شعبہ کی بدنامی افسوسناک، طلبہ سے مودی کا خطاب
نئی دہلی 4 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج اس امر پر سخت افسوس کا اظہار کیاکہ سیاست آئے دن بدنام ہوگئی ہے اور اچھے لوگ سیاسی میدان سے وابستگی سے خوفزدہ ہورہے ہیں۔ لیکن زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد کو چاہئے کہ وہ خوف و اندیشوں میں مبتلا ہوئے بغیر سیاست سے وابستہ ہوجائیں۔ وزیراعظم کے عہدہ پر فائز ہونے کے بعد یوم اساتذہ کے موقع پر طلبہ سے اپنے دوسرے سالانہ خطاب کے موقع پر نریندر مودی نے طلبہ کو مشورہ دیا کہ وہ ناکامی کی صورت میں مایوس نہ ہوں اور اپنے منزل و مقصد کو ترک نہ کریں بلکہ اس کے حصول کے لئے ثابت قدمی کے ساتھ عمل پیرا رہیں۔ وزیراعظم منودی نے عوام پر زور دیا کہ وہ اپنے بچوں پر اپنی مرضی مسلط نہ کریں بلکہ بچوں کو اپنی پسند اور مرضی کے مطابق مختلف تعلیمی کورسیس اختیار کرنے کا موقع فراہم کریں۔ اُنھوں نے طلبہ سے بات چیت کے دوران اس بات پر افسوس کا اظہار کیاکہ ملک میں سیاسی شعبہ بُری طرح بدنام ہوگیا ہے۔ اچھے لوگ سیاسی میدان سے وابستگی کے بارے میں خوفزدہ ہورہے ہیں اور یہ سمجھنے لگے ہیں کہ اچھے لوگوں کو سیاسی شعبہ سے وابستہ نہیں ہونا چاہئے۔ اس رجحان سے ملک کو بُری طرح نقصان ہورہا ہے۔ مودی دہلی کے مختلف اسکولوں سے تعلق رکھنے والے 60 ٹیچرس اور 800 طلبہ سے مانک شاہ اسٹیڈیم میں خطاب کررہے تھے۔

TOPPOPULARRECENT