Tuesday , May 23 2017
Home / Top Stories / میری زندگی کے قیمتی 12 سال لوٹا دو ……

میری زندگی کے قیمتی 12 سال لوٹا دو ……

دہلی دھماکہ مقدمے میں بے قصور محمد حسین فاضلی کی گھر واپسی اور ضعیف والدین سے ملاقات

سرینگر ۔ /19 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) 2005 ء دہلی بم دھماکے مقدمہ میں بری کردیئے گئے محمد حسین فاضلی نے آج یہ سوال کیا کہ میری زندگی کے قیمتی 12 سال کون لوٹائے گا ؟ جموں و کشمیر سے تعلق رکھنے والے محمد حسین فاضلی 12 سال کے طویل عرصہ بعد جب اپنے آبائی مقام بش پورہ پہونچے تو یہاں سب کچھ بدل چکا تھا ۔ 43 سالہ فاضلی کیلئے صدمہ انگیز خبر یہ بھی رہی کہ اس کے والدین ضعیف العمری کو پہونچ چکے ہیں ۔ والدہ پر فالج کا حملہ ہوا اور والد امراض قلب کا شکار ہیں ۔ محمد حسین فاضلی نے 12 سال دہلی کی انتہائی سخت سکیورٹی کے حامل تہاڑ جیل میں گزارے اور اس کا قصور کچھ نہیں تھا ۔ اس مقدمہ میں فاضلی کے علاوہ محمد رفیق شاہ کو جن کا تعلق کشمیر سے ہی ہے عدالت نے بری کردیا ہے ۔ وہ آج صبح اپنے گھر پہونچا جہاں اسے ماحول بالکل بدلا ہوا سا دکھائی دے رہا تھا ۔ والدین سے ملاقات کے بعد محمد حسین فاضلی نے کہا کہ ہم نے کوئی غلط کام نہیں کیا اس کے باوجود 12 سال تک ملزم بنے رہے ۔ انہوں نے کہا کہ میری زندگی کے کھوئے ہوئے قیمتی 12 سال کون لوٹائے گا ؟ میرے والدین جن مصائب کا شکار ہوئے کیا کوئی یہ زخم مندمل کرسکتا ہے ۔ اس نے کہا کہ یہ سوچ کر ایک اطمینان محسوس ہوتا ہے کہ وہ کم از کم اپنے گھر واپس ہوگیا ہے ۔ فاضلی نے 2005 ء نومبر کی وہ رات یاد کی جب وہ عشاء کی نماز سے واپسی کے بعد اپنے گھر میں شال بن رہا تھا کہ اچانک دروازے پر دستک ہوئی ۔ پولیس کی ایک ٹیم نے یہ کہتے ہوئے کہ دہلی دھماکوں کے سلسلے میں پوچھ تاچھ کرنی ہے اسے لے گئی اور پھر 12 سال کے بعد والدین اپنے بیٹے کو دیکھ پائے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT