Thursday , August 24 2017
Home / سیاسیات / میر صادق ریمارک پر دیوے گوڑا کو مسلم قائدین کی برہمی کا سامنا

میر صادق ریمارک پر دیوے گوڑا کو مسلم قائدین کی برہمی کا سامنا

بنگلورو ۔ 10 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) کرناٹک کی مختلف مسلم تنظیموں نے سابق وزیراعظم اور جے ڈی (ایس) کے سربراہ کے ان ریمارکس پر برہمی کا اظہار کیا ہے جن میں انہوں نے اپنی پارٹی کے ایک رکن اسمبلی ضمیراحمد کو میرصادق قرار دیا تھا۔ دیوے گوڑا سے مطالبہ کیا گیا ہیکہ وہ اپنے ریمارکس سے دستبردار ہوجائیں اور مسلم برادری سے ان کے مذہبی جذبات مجروح کرنے پر معذرت خواہی کی جائے۔ ٹیپوسلطان یونائیٹیڈ فرنٹ کے صدر سردار احمد قریشی نے کہا کہ ضمیراحمد کو میرصادق قرار دینے سے مسلمانوں کے مذہبی جذبات مجروح ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان اس (میر صادق) کے نام سے اس لئے نفرت کرتے ہیں کہ اس نے ٹیپو سلطان کو دھوکہ دیا تھا ۔ بعض مسلم قائدین نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ ریمارکس سے دستبردار ہونے میں دیوے گوڑا کی ناکامی پر وہ 13 فروری کو حلقہ اسمبلی ہیبل میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں کانگریس کے امیدوار عبدالمتین شریف کو وٹ دیں۔ دیوے گوڑا نے حلقہ اسمبلی ہیبل میں مہم کے دوران ضمیر کو ان کی مخالف پارٹی سرگرمیوں پر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ’’میر صادق‘‘ سے تعبیر کیا تھا ۔ مدرسہ غریب نواز کے صدر اللہ بخش عامر نے کہا کہ ’’میر صادق مسلمانوں کے نام پر ایک داغ ہے اور کسی مسلمان کو اس نام سے پکارنا ساری مسلم برادری کی توہین ہے ۔ گوڑا کو اپنے ریمارکس واپس لینا چاہئے ۔ اس سے کم کوئی بات قابل قبول نہیں ہوگی‘‘۔ واضح رہے کہ میر صادق نے جو میسور فوج میں جنرل تھا ۔ 1799 ء میں لڑی گئی چوتھی انگریز۔میسور جنگ میں میسور کے حکمراں ٹیپو سلطان کو دھوکہ دیا تھا جس کے نتیجہ میں برطانیہ کی فتح ہوئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT