Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / میٹرو ریل کا 75 فیصد مجموعی کام مکمل

میٹرو ریل کا 75 فیصد مجموعی کام مکمل

جنوبی کوریا سے 57 ٹرینس پہونچ چکی ہیں
حیدرآباد 27 ڈسمبر (پی ٹی آئی) حیدرآباد میٹرو ریل کے جاری 72 کیلو میٹر طویل پراجکٹ کے سلسلہ میں مجموعی طور پر 75 فیصد کام مکمل ہوچکا ہے۔ منیجنگ ڈائرکٹر این وی ایس ریڈی نے کہاکہ اِس پراجکٹ کے لئے 2016 ء کافی اہم سال رہا۔ کئی زیرتصفیہ جائیدادوں کو حاصل کرلیا گیا اور بعض مقامات پر جو تنازعات تھے اُن کی بھی یکسوئی کرلی گئی۔ اِس سال حیدرآباد میٹرو ریل پراجکٹ پر 2,902 کروڑ روپئے کی رقم صرف کی گئی۔ اِس میں 2742 کروڑ روپئے ایل اینڈ ٹی میٹرو ریل حیدرآباد اور 160 کروڑ روپئے حیدرآباد میٹرو ریل نے صرف کی ہے۔ اُنھوں نے بتایا کہ پراجکٹ پر اب تک کے مجموعی مصارف 14,172 کروڑ روپئے ہیں۔ 61 کیلو میٹر میں 2340 بنیادوں، 2321 ستونوں (58 کیلو میٹر)، اور 50 کیلو میٹر میں پُلوں کی تعمیر مکمل کرتے ہوئے ایک بڑا مرحلہ پورا کرلیا گیا ہے۔ یہی نہیں بلکہ الیکٹریکل ٹرایکشن، سگنلنگ اور ٹیلی کمیونکیشن سسٹم بھی مختلف اسٹیشنس پر کام کرنا شروع کرچکے ہیں۔ اِس پراجکٹ میں مجموعی طور پر 75 فیصد پیشرفت ہوچکی ہے۔ ایل اینڈ ٹی میٹرو ریل حیدرآباد 72 کیلو میٹر طویل پراجکٹ پر کام کررہا ہے جس کی 3 راہداریاں اور 66 اسٹیشنس ہوں گے۔ انھوں نے بتایا کہ ہونڈائی روٹیم ، جنوبی کوریا سے تمام 57 تھری کار ٹرینس پہونچ چکی ہیں اور میاں پور تا ایس آر نگر سیکشن (راہداری 1) کے لئے کمشنر میٹرو ریل سیفٹی کی منظوری بھی مل چکی ہے۔ یہ پراجکٹ ابتداء میں جولائی 2017 ء میں مکمل ہونے والا تھا لیکن بعض تبدیلیوں، حصول اراضیات اور دیگر مسائل کی وجہ سے تاخیر ہورہی ہے۔حکام نے اِس سے پہلے کہا تھا کہ میٹرو ریل کی تمام راہداری بشمول پرانا شہر سے گزرنے والی راہداری کو ڈسمبر 2018 ء تک مکمل کرلیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT