Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / میٹرو پراجکٹ مقررہ وقت میں مکمل کرنے کا ادعا

میٹرو پراجکٹ مقررہ وقت میں مکمل کرنے کا ادعا

پرانے شہر کیلئے منتخبہ نمائندوں سے مشاورت کی جائے گی: کے ٹی آر کا ایوان اسمبلی میں بیان
حیدرآباد 13 مارچ (سیاست نیوز) میٹرو ریل پراجکٹ معینہ مدت میں مکمل کرلیا جائے گا اور پراجکٹ میں کسی قسم کی دھاندلیاں نہیں ہیں۔ کوئی بھی عوامی پراجکٹ کی تکمیل فائدہ یا نقصان کی بنیاد پر نہیں ہوتی بلکہ عوام کو سہولتیں پہنچانے کی غرض سے پراجکٹ تیار کئے جاتے ہیں۔ دنیا بھر میں 200 میٹرو ریل پراجکٹس ہیں جن میں صرف 4 پراجکٹ ایسے ہیں جو فائدہ مند ثابت ہورہے ہیں۔ ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق و انفارمیشن ٹیکنالوجی مسٹر کے ٹی راما راؤ نے آج ایوان اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران اُٹھائے گئے مسئلہ پر جواب دیتے ہوئے یہ بات کہی۔ اُنھوں نے بتایا کہ حیدرآباد میٹرو ریل پراجکٹ جوکہ پرانے شہر میں 5½ کیلو میٹر کا احاطہ کررہا ہے، اِس سلسلہ میں منتخبہ نمائندوں سے مشاورت کے بعد قطعیت دی جائے گی۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے بتایا کہ حیدرآباد میٹرو ریل پراجکٹ کی راہداری میں فی الحال کسی تبدیلی کا منصوبہ نہیں ہے۔ اُنھوں نے مزید کہاکہ میٹرو ریل پراجکٹ کے تعمیری کاموں کا جائزہ لینے کے لئے ایک ٹاسک فورس تشکیل دی گئی ہے جس کی نگرانی ریاستی چیف سکریٹری کررہے ہیں اور ہر 15 دن میں عہدیدار اُنھیں کارکردگی کی رپورٹ پیش کرتے ہیں۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ مختلف جماعتوں کے ارکان اسمبلی کی جانب سے پوچھے گئے سوالات کا جواب دے رہے تھے۔ انھوں نے بتایا کہ پراجکٹ کا آغاز سپٹمبر 2010 ء میں ہوا اور 2014 ء تک سست رفتار تعمیراتی کام جاری تھے لیکن 2 جون 2014 ء کے بعد سے حیدرآباد میٹرو ریل پراجکٹ کے کاموں میں تیز رفتار ترقی عمل میں لائی گئی جس کے نتیجہ میں ایل بی نگر، اوپل اور میاں پور میں تقریباً پراجکٹ پایہ تکمیل کو پہونچ چکا ہے۔ انھوں نے بتایا کہ معاہدہ کے مطابق 35 سال کی لیز موجود ہے اور اِس مدت میں مزید 25 سال کے اضافہ کی گنجائش فراہم کی گئی ہے۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے کہاکہ بعض مقامات پر راستوں کی تبدیلی کے سبب پراجکٹ میں کچھ تاخیر ہورہی ہے لیکن معینہ مدت میں پراجکٹ کی تکمیل کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ اُنھوں نے کہاکہ ریاست میں ٹی آر ایس کے اقتدار سنبھالنے کے بعد پراجکٹس سے تقریباً 2000 مقدمات جاری تھے جن میں کئی اہم مقدمات کی بات چیت کے ذریعہ یکسوئی کرلی گئی ہے جن میں علاء الدین بلڈنگ، کنٹری کلب، سارتھی اسٹوڈیو کے علاوہ کئی چرچس شامل ہیں۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے بتایا کہ پراجکٹ کے لئے حاصل کی گئی جملہ 269 ایکر اراضی میں 212 ایکر سرکاری اراضی ہے جبکہ 57 ایکر خانگی اراضی حاصل کی گئی ہے۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے مزید کہاکہ میٹرو ریل کا کرایہ 13 تا 25 روپئے کے درمیان رکھنے کا منصوبہ ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ 75 فیصد تعمیراتی کام مکمل کرلئے گئے ہیں۔ میٹرو ریل پراجکٹ کی جملہ مالیت کے متعلق ریاستی وزیر نے بتایا کہ 14,132 کروڑ کی تخمینی لاگت والے اس پراجکٹ کی لاگت میں فی الحال کوئی اضافہ نہیں کیا گیا ہے۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے میٹرو ریل پراجکٹ میں مزید 83 کیلو میٹر کی توسیع کے متعلق کہاکہ مختلف علاقوں تک اِسے وسعت دینے کا منصوبہ بھی زیرغور ہے جس میں اُپل تا یدادری، رائے درگم تا شمس آباد، ایل بی نگر تا حیات نگر، تارناکہ تا ای سی آئی ایل کی روٹ پر غور کیا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT