Friday , July 21 2017
Home / شہر کی خبریں / میڈیکل کالجس میں تعلیمی فیس میں مزید اضافہ نہ کیا جائے

میڈیکل کالجس میں تعلیمی فیس میں مزید اضافہ نہ کیا جائے

طلبہ فیس کی ادائیگی سے محروم ہوجائیں گے ، جونیر ڈاکٹرس اسوسی ایشن عثمانیہ میڈیکل کالج کا مطالبہ
حیدرآباد۔4مئی (سیاست نیوز) خانگی میڈیکل کالجس کی جانب سے میڈیکل فیس میں اضافہ کے مطالبہ کو قبول نہیں کیا جانا چاہئے کیونکہ میڈیکل کالجس کی جانب سے کئے جا رہے اس مطالبہ کو منظور کئے جانے کی صورت میں ذہین طلبہ جنہیں محنت و مشقت کے بعد میڈیکل نشست حاصل ہو تی ہے وہ فیس کی عدم ادائیگی کے سبب داخلہ سے محروم ہو جائیں گے۔ جونیئرڈاکٹرس اسوسیشن عثمانیہ میڈیکل کالج نے فیس میں اضافہ کے مطالبہ کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے اضافہ سے مستحق طلبہ جو مہارت اور ذہانت کی بنیاد پر نشست حاصل کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں انہیں فیس کی عدم ادائیگی کی اہلیت نہ ہونے کے سبب ایم بی بی ایس میں داخلہ سے محروم ہونا پڑے گا۔ جونیئر ڈاکٹرس اسوسیشن کے ذمہ داروں نے بتایا کہ ریاست میں خانگی میڈیکل کالجس کے ذمہ داروں کی جانب سے کنوینر کوٹہ کی نشست میں موجودہ فیس 3.2لاکھ کو بڑھاکر 15لاکھ کرنے اور مینجمنٹ کوٹہ کی نشستوں کی موجودہ فیس 5.8لاکھ کو بڑھا کر 25لاکھ کرنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے جو کہ انتہائی غیر واجبی ہے۔جونیئر ڈاکٹر س کا کہنا ہے کہ قومی اہلیتی امتحانات کے انعقاد کے بعد دھاندلیوں کی گنجائش ختم ہونے کے نتیجہ میں خانگی میڈیکل کالج انتظامیہ اس طرح کے مطالبات کرنے لگے ہیں اور ان مطالبات کو حکومت کی جانب سے پورا کئے جانے کی صورت میں جونیئر ڈاکٹر س کی جانب سے باضابطہ تحریک چلائی جائے گی تاکہ غریب و مستحق طلبہ کے حقوق کے تحفظ کو ممکن بنایا جاسکے۔ JUDAکے اراکین نے بتایا کہ ریاست میں خانگی میڈیکل کالجس کی جانب سے کئے جا رہے مطالبہ کو تسلیم کیا جانا طلبہ کو داخلہ کے حصول سے محروم کرنے کے مترادف ہوگا اسی لئے میڈیکل کالجس انتظامیہ کے اس مطالبہ کو حکومت کی جانب سے فوری مسترد کرنے کے احکام جاری کرنے چاہئے کیونکہ اس کا منفی اثر غریب طلبہ پر زیادہ ہوگا جو فیس ادا کرنے سے قاصر رہنے کے سبب داخلہ لینے کے متعلق غور بھی نہیں کریں گے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT