Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / میکسیکو میں پٹاخوں کے بازار میں مہیب آتشزدگی، 31 ہلاک

میکسیکو میں پٹاخوں کے بازار میں مہیب آتشزدگی، 31 ہلاک

۔72 زخمیوں میں متعدد کی حالت تشویشناک، کرسمس اور سال نو کے جشن سے قبل سنگین المیہ، 300 دوکانات تباہ

ٹلٹیپک ۔ 21 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) میکسیکو میں پٹاخوں کا سب سے بڑا مارکٹ آج ایک تباہ کن دھماکہ کے بعد مکمل طور پر جھلس کر خاکستر ہوگیا جس کے نتیجہ میں کم سے کم 31 افراد ہلاک اور دیگر 72 زخمی ہوگئے۔ دارالحکومت میکسیکوسٹی کے مضافات ٹلٹیپک میں پٹاخوں کے سب سے بڑے بازار میں اچانک آگ بھڑک اٹھنے کے بعد کئی گوداموں میں سلسلہ وار دھماکے ہوگئے۔ کرسمس تہوار کے موقع پر آتشبازی کیلئے تیار شدہ پٹاخوں کے حادثاتی طور پر پھٹ پڑنے سے رنگ برنگے شعلے بھڑک اٹھے اور دارالحکومت کے آسمان پر دھویں کے بادل اٹھتے دیکھے گئے۔ اس حادثے کے وقت بازار میں ہر طرف اختتام سال کی روایتی گہماگہمی تھی۔ ہزاروں گاہک کرسمس اور سال نو کیلئے پٹاخے خریدنے جمع ہوئے تھے۔ لاطینی  امریکہ کے اکثر ممالک میں ان دنوں موقع پر زبردست آتشبازی کی جاتی ہے۔ ایک پولیس عہدیداروں نے کہا کہ ’’کئی افراد نے صرف زوردار دھماکوں کی آواز سنی ہے حالانکہ بازار میں ہر طرف سب کچھ جل رہا تھا اور آگ سے بچنے کیلئے لوگ ہر طرف دوڑ رہے تھے‘‘۔ پٹاخوں کے بازار میں ایک طرف آگ بھڑک اٹھی تھی کہ اس سے چند کیلو میٹر دور یہ کوئی حادثہ ن ہیں بلکہ آتشبازی کا دانستہ خوبصورت منظر نظر آرہا تھا۔ ہر طرف سے رنگ برنگے شعلے اٹھ رہے تھے۔ کئی پٹاخے تیزی سے آسمان کی طرف اڑتے ہوئے فضاء میں خوبصوررت نقش و نگار بن کر پھوٹ رہے تھے۔

میکسیکو کے اعلیٰ استغاثہ ملینیو الاہاندرو گومز نے کہا کہ 31 افراد فوت ہوچکے ہیں۔ 26 افراد مقام حادثہ پر اور دیگر 5 دواخانوں میں فوت ہوئے ہیں۔ میکسیکو کے اسٹیٹ گورنر ایروویل آویلا نے ٹیلیویژن چینل سے کہا کہ فارنسک ماہر نعشوں کے تجزیہ میں مصروف ہیں لیکن ان تمام کی شناخت ناممکن ہوگئی ہے۔ 72 افراد زخمی ہوئے ہیں۔ چند کی حالت تشویشناک ہے جنہیں دواخانوں میں شریک کردیا گیا ہے۔ 21 کو ابتدائی طبی امداد پہنچانے کے بعد ڈسچارج کردیا گیا۔ سیول پروٹیکشن سرویس کے سربراہ لوئیس فلپ پیونٹے نے کہا کہ آگ بجھانے کیلئے آتش فرو عملہ کو تمام پٹاخے پھٹ پڑنے تک انتظار کرنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ اب پٹاخوں کا سارا بازار ختم ہوچکا ہے جہاں چند گھنٹے پہلے تک 300 دکانات تھیں۔ قریب واقع گھروں اور گاڑیوں کو بھی  بھاری نقصانات پہنچے ہیں۔ کرسمس اور سال نو کے جشن کی تیاریوں میں مصروف افراد کی خوشیوں کے درمیان اس مہیب حادثہ نے سارے علاقہ پر رنج و غم کا ماحول طاری کردیا۔ کئی افراد نعشوں کے قریب آہ و بکا کرتے دیکھے گئے۔ دیگر افراد زخمیوں کی مدد میں مصروف تھے اور اکثر افراد جن میں خواتین اور بچوں کی کثیر تعداد شامل تھی، اپنی جان بچانے کیلئے دیوانہ وار دوڑتے رہے۔ فوج اور پولیس نے اس علاقہ کا محاصرہ کرلیا اور امدادی ٹیمیں راحت اور بچاؤ کے کاموں میں مصروف ہوگئیں۔ میکسیکو کے صدر اینریکے پیناہیٹو نے ایک ٹوئیٹر پیغام کے ذریعہ تمام مہلوکین کے خاندانوں سے تعزیت اور زخمیوں سے جلد صحتیابی کیلئے اپنی نیک تمناؤں کا اظہار کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT