Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / میں نے خود سپردگی اختیار نہیں کی ‘ چھوٹا راجن کا ادعا

میں نے خود سپردگی اختیار نہیں کی ‘ چھوٹا راجن کا ادعا

DENPASAR, OCT 29 :- Indonesian plainclothed policemen escort gangster Rajendra Nikalje, widely known as Chhota Rajan (C), as they walk at Denpasar police office October 29, 2015. REUTERS/UNI PHOTO-14R

ہندوستان واپس جانا چاہتا ہوں‘ سی بی آئی کی آمد کا انتظار ہے
داود ابراہیم یا کسی اور گینگ سے جان کا خطرہ ہونے کی تردید
بالی ( انڈونیشیا ) 29 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ممبئی کے پولیس کمشنر جاوید احمد نے کہا کہ چھوٹا راجن کئی مقدمات کے سلسلہ میں ممبئی پولیس کو مطلوب ہے اور پولیس تمام مقدمات چلانے کی مکمل تیاری کرچکی ہے۔ ان اطلاعات کو مسترد کرتے ہوئے کہ اس نے پولیس کے سامنے ہتھیار ڈالے ہیں انڈر ورلڈ ڈان چھوٹا راجن نے آج کہا کہ وہ ہندوستان واپس جانا چاہتا ہے جہاں وہ انتہائی مطلوب مجرمین میں سے ایک ہے ۔ چھوٹا راجن نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس نے خود سپردگی اختیار نہیں کی ہے ۔ اس سے ان قیاس آرائیوں کے تعلق سے سوال کیا گیا تھا جن میں یہ کہا جا رہا ہے کہ اس نے مختلف مخالف گینگس سے درپیش جان کے خطرہ کے پیش نظر پولیس کے سامنے ہتھیار ڈالے ہیں۔ یہ قیاس کیا جارہا تھا کہ چھوٹا راجن نے داؤد ابراہیم سے خطرہ کے پیش نظر ہندوستانی انٹلی جنس ایجنسیوں سے خفیہ معاملت کی ہے ۔ راجن نے داؤد سے خوفزدہ رہنے کی بھی تردید کی ۔ چھوٹا راجن ہندوستان میں 75 سے زیادہ مقدمات میں ملوث اور مطلوب ہے

جن میں قتل ‘ جبری وصولی ‘ اسمگلنگ ‘ منشیات کی تجارت اور کئی سنگین جرائم شامل ہیں۔ بعض گوشوں کا خیال ہے کہ اس نے ہندوستانی سکیوریٹی ایجنسیوں سے کوئی معاملت کرلی ہے ۔ راجن نے کہا کہ یہاں اسے کئی مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ ان لوگوں نے اسے یہاں باندھ کر رکھا ہے ۔ وہ ہندوستان واپس جانا چاہتا ہے ۔ 55 سالہ راجن کا اصلی نام راجندر سداشیو نکھلجے ہے ۔ وہ کسی وقت میں انڈر ورلڈ ڈان داؤد ابراہیم کا انتہائی قریبی اور بااعتماد ساتھی رہا ہے ۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ داود سے خوفزدہ نہیں ہے ۔ ممبئی میں پیدا ہوا چھوٹا راجن کا کہنا ہے کہ وہ داود سے خوفزدہ نہیں ہے ۔ وہ یہاں سی بی آئی کی آمد کا انتظار کر رہا ہے ۔ بالی پولیس کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس کے عملہ نے آج چھ گھنٹوں تک چھوٹا راجن سے پوچھ تاچھ کی ہے اور بہت جلد اس سے مزید پوچھ تاچھ کی جائیگی ۔ ذرائع نے کہا کہ ہندوستانی حکام کو اس کی شناخت کی توثیق کرنے کیلئے 15 دن کا وقت ہے اور حکومت نے اس کی تحویل حاصل کرنے کی کوششیں بھی شروع کردی ہیں۔

بالی پولیس کمشنر رین ہارڈ نینگولن نے کہا کہ راجن کی گرفتاری نفاذ قانون کی ایک زبردست کارروائی تھی اور یہ کارروائی انٹرپول کی نگرانی میں کی گئی ہے ۔ چھوٹا راجن کو جو ہندوستان میں انتہائی مطلوب گینگسٹر ہے انڈونیشیا کے اس مقبول عام سیاحتی جزیرہ میں انٹرپول کی ریڈ کارنر نوٹس کی اجرائی کے بعد گرفتار کیا گیا تھا ۔ کہا گیا ہے کہ چھوٹا راجن کو پولیس گذشتہ دو دہوں سے تلاش کر رہی تھی ۔ چھوٹا راجن کے خلاف جو 75 مقدمات درج ہیں ان میں سے چار ٹاڈا کے تحت ‘ ایک پوٹا اور 20 مقدمات مکوکا کے تحت درج ہیں۔ ہندوستانی سکیوریٹی ایجنسیوں کی جانب سے امکان ہے کہ عہدیداروں کی ایک ٹیم جلد بالی روانہ کی جائیگی جہاں چھوٹا راجن اتوار سے تحویل میں ہے ۔ ذرائع نے چھوٹا راجن کو واپس لانے کیلئے کی جا رہی کوششوں کے تعلق سے کچھ بھی بتانے سے گریز کیا ہوا ہے اور اس کو سکیوریٹی کے نقطہ نظر سے دیکھا جا رہا ہے ۔ کہا جارہا ہے کہ حکام مختلف امکانات کا جائزہ لے رہے ہیں اور ایک سے زیادہ منصوبے تیار کئے گئے ہیں جن پر غور کیا جا رہا ہے ۔ چھوٹا راجن کو جس وقت گرفتار کیا گیا وہ موہن کمار کی حیثیت سے پاسپورٹ نمبر G9273860 پر سفر کر رہا تھا ۔ وہ آسٹریلیا سے یہاں پہونچا تھا اور آسٹریلیائی حکام کی اطلاع پر اس کی گرفتاری عمل میں آئی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT