Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / نئے دارالحکومت کیلئے اراضیات زبردستی حاصل کرنے کیخلاف انتباہ

نئے دارالحکومت کیلئے اراضیات زبردستی حاصل کرنے کیخلاف انتباہ

حیدرآباد 23 اگسٹ (این ایس ایس) مشہور اداکار اور جنا سینا کے بانی صدر پون کلیان نے آج اے پی کے مجوزہ دارالحکومت امراوتی کے تحت چند علاقوں کا دورہ کیا جہاں تلگودیشم حکومت آندھراپردیش کے نئے دارالحکومت کے لئے کسانوں سے زرعی اراضیات حاصل کرنا چاہتی ہے۔ پون کلیان نے گنٹور ڈسٹرکٹ کے تاڑے پلی منڈل کے تحت چند علاقوں کا دورہ کیا جہاں تلگودیشم حکومت آندھراپردیش کے نئے دارالحکومت کے لئے کسانوں سے زرعی اراضیات حاصل کرنا چاہتی ہے۔ پون کلیان نے گنٹور ڈسٹرکٹ کے تاڑے پلی منڈل کے تحت پینو ماکا میں گورنمنٹ کالج میں منعقدہ کسانوں کے جلسہ میں شرکت کی۔ قبل ازیں پون کلیان براہ اونڈاولی، پینوماکا جاتے ہوئے راستہ میں زرعی اراضیات کا معائنہ کیا۔ پون کلیان نے کسانوں سے بات کی جنھوں نے ان کی زرخیز زمینات کو حاصل کرنے کے حکومت کے منصوبہ پر اپنی ناراضگی کا اظہار کیا۔ کسانوں نے جنا سینا کے صدر کو بتایا کہ وہ ان کی زمینات دینا نہیں چاہتے ہیں جس سے سال میں تین فصلیں حاصل ہوتی ہیں اور اے پی حکومت کی جانب سے جس پیاکیج کا اعلان کیا گیا ہے وہ بہت قلیل اور معمولی ہے۔ انھوں نے پون کلیان کو اس بات سے بھی واقف کروایا کہ سرکار عہدیدار اور وزراء یہ کہتے ہوئے انھیں ان کی زمینات حوالہ کرنے کیلئے مجبور کررہے ہیں کہ حکومت انھیں خاطر خواہ معاوضہ ادا کرے گی۔ ورنہ اگر ان کی اراضیات کو قانون حصول اراضی کے تحت حاصل کیا گیا تو انھیں کچھ بھی حاصل ہوسکتا ہے۔ کسانوں نے پون کلیان پر زور دیا کہ حکومت سے اس سلسلہ میں بات کی جائے اور ضروری اقدامات کئے جائیں۔ کسانوں نے پون کلیان کو یہ بھی بتایا کہ اگر حکومت ان کی اراضیات کو زبردستی چھین لے تو وہ خودکشی کریں گے کیوں کہ ان کے لئے کوئی دوسرا متبادل نہیں ہوگا۔ انھوں نے پون کلیان کو ایک یادداشت بھی پیش کی۔ پی ٹی آئی کے مطابق صدر جنا سینا پون کلیان نے انتباہ دیا کہ اگر آندھراپردیش کی تلگودیشم حکومت ریاست کے نئے دارالحکومت کی تعمیر کے لئے زبردستی اراضیات حاصل کرنے کے اقدامات کرے تو دھرنا منظم کریں گے۔ انھوں نے حکومت سے خواہش کی کہ بعض مواضعات میں حصول اراضی کے لئے جاری کئے گئے اعلامیہ سے دستبردار ہوجائے۔ انھوں نے حکومت کو مشورہ دیا کہ نئے دارالحکومت سے متعلق مسائل کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دی جائے جو لوک ستہ قائد جئے پرکاش نارائن جیسے افراد اور ریٹائرڈ پروفیسرس اور انجینئرس پر مشتمل ہو۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT