Monday , September 25 2017
Home / اضلاع کی خبریں / نارائن پیٹ کو ضلع کا درجہ نہ دینا ناانصافی

نارائن پیٹ کو ضلع کا درجہ نہ دینا ناانصافی

مسلم مہا گرجنا سے رکن اسمبلی گدوال ڈی کے ارونا کا خطاب

نارائن پیٹ۔/9نومبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) 64 منڈلوں پر مشتمل تلنگانہ کے سب سے بڑے ضلع محبوب نگر میں پانچ اضلاع کی تشکیل ممکن تھی، نارائن پیٹ ڈیویژن کو جو 15 منڈلوں پر مشتمل قدیم ڈیویژن ہے ، ضلع کا درجہ نہیں دینا سراسر ناانصافی ہے۔ اس کے خلاف نارائن پیٹ کے عوام کو اپنے حق کے لئے جدوجہد جاری رکھنا چاہیئے اور اس لڑائی میں میں آپ کے شانہ بہ شانہ ساتھ ہوں۔ ان خیالات کا اظہار محترمہ ڈی کے ارونا سابق ریاستی وزیر و رکن اسمبلی گدوال نے نارائن پیٹ میں ضلع سادھنا سمیتی کی تائید میں منعقدہ مسلم مہا گرجنا میں خطاب میں کیا جس میں مستقر و اطراف و اکناف سے زائد 10ہزار مسلمانوں نے شرکت کی۔ انہوں نے سلسلہ تقریر جاری رکھتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ حکومت نئے اضلاع کی تشکیل پر حکومت کو عوام کے قریب لانے اور سہولیات فراہم بہم پہنچانے کی خاطر کی تھی لیکن اس کوکسی بھی اعتبار سے محفوظ نہیں رکھا گیا۔ اس جلسہ کی صدارت ضلع سادھنا سمیتی کنوینر ڈاکٹر منوہر گوڑ نے کی۔ جبکہ مہمانان خصوصی کے طور پر سجادہ نشین نارائن پیٹ جناب غیاث الدین قادری، سجادہ نشین کولم پلی جناب سید شاہ جلال حسینی، جناب نظام پاشاہ، صدر نشین ڈی سی سی بی محبوب نگر کے علاوہ غلام محی الدین چاند، محسن بابا، عبدالسلیم ایڈوکیٹ ، عبدالرحمن منیر احمد فاروقی، دستگیر چاند، محمود قریشی، تاج الدین، رفیق چاند، محمد غوث انجینئر ارشد فیصل، یونس تارکش، عظیم ٹرکی و دیگر نے شرکت کی۔ قبل ازیں ایک عظیم الشان ریالی لعل مسجد سے نکالی گئی جس میں ہزارں مسلمانوںنے شرکت کی۔ ان کے علاوہ تمام سیاسی جماعتوں کے سرکردہ قائدین، مسرز ناگوراؤ ناموجی، کراشنا، گھنشام داس درک، شریمتی انسویا چندر کانت، رگنگا پانڈوریڈی، انمیش چاری، ڈیویژن کے ایم پی ٹی سی، زیڈ پی ٹی سی ، سرپنچوں، ارکان بلدیہ مختلف مقامات کے قائدین نے شرکت کی۔ جلسہ کا آغاز قرأت کلام پاک سے ہوا۔

جعلی کرنسی پر قابو پانے حکومت کے اقدام کا خیرمقدم
نرمل۔/9نومبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ایک ہزار اور پانچ سو کے نوٹوں کے تعلق سے عوام میں جو تشویش پائی جاتی ہے اس تناظر میں نرمل کے ایک سینئر انکم ٹیکس ایڈوکیٹ مسٹر مٹ پلی سریش نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ حکومت کا یہ فیصلہ قابل خیرمقدم ہے اس اقدام سے جعلی کرنسی پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ عام لوگوں کو اس تعلق سے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ،کوئی غلط فہمی ہو تو وہ راست مٹ پلی سریش انکم ٹیکس ایڈوکیٹ سے ان کے دفتر واقع بدھوار پیٹ میں ملاقات کرسکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT