Monday , September 25 2017
Home / اضلاع کی خبریں / نارائن کھیڑ کیلئے گوداوری سے پانی کی سربراہی کا تیقن

نارائن کھیڑ کیلئے گوداوری سے پانی کی سربراہی کا تیقن

ہر طبقہ کی ترقی کیلئے حکومت کوشاں، ٹی آر ایس امیدوار کو کامیاب بنانے عوام سے چیف منسٹر کی اپیل

نارائن کھیڑ۔/10فبروری، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) نارائن کھیڑ کے رحمن فنکشن ہال کے قریب ٹی آر ایس پارٹی کی جانب سے منعقدہ انتخابی جلسہ عام سے تلنگانہ کے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ تحریک کا آغاز 2001ء میں کیا گیا تھا، آندھرا پردیش حکومت میں تلنگانہ علاقہ کو پسماندہ رکھا گیا تھا۔ جس وقت تلنگانہ تحریک شروع ہوئی تھی اسوقت کانگریس اور تلگودیشم کے قائدین تنقید کرکے تحریک کو روکنے کی کوشش کی گئی، سبھی طبقہ کے لوگوں کی مدد سے تلنگانہ ریاست کا قیام عمل میں آیا اور اس ریاست کی ترقی کیلئے ہمیں دن رات کوشش کرنا ضروری ہے۔ غریب عوام کے تمام طبقہ کیلئے فلاحی اسکیمات منظور کئے گئے۔ مستحق غریب مرد و خواتین کو ایک ہزار پنشن دیا گیا ہے، سفید کارڈ پر ایک فرد کو 4کیلو چاول کے بجائے 6کیلو چاول دیا جارہا ہے۔ آٹو رکشا پر سے ٹیکس نکال دیا گیا، ڈرائیوروں کیلئے بیمہ اسکیم دی جارہی ہے۔ مستحق غریب عوام کیلئے ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیر کرکے دیئے جائیں گے۔ ہاسٹلوں میں زیر تعلیم طلبہ کو باریک چاول سربراہ کیا جارہاہے۔ اسمبلی میں آج بھی غنڈہ گردی کی جارہی ہے، شراب اور روپیوں کے ذریعہ ووٹوں کو خریدنے کی کوشش یہاں کے قائدین تلگودیشم و کانگریس والے کررہے ہیں۔

چیف منسٹر نے کہا کہ گوداوری کا پانی حلقہ اسمبلی نارائن کھیڑ کے مواضعات کو سربراہ کیا جائے گا اور اس حلقہ کو سدی پیٹ حلقہ کی طرح ترقی دی جائے گی۔ حلقہ اسمبلی نارائن کھیڑ کے ٹی آر ایس امیدوار ایم بھوپال ریڈی کے کار کے نشان کو ووٹ دے کر بھاری اکثریت سے کامیاب بنانے پر اس حلقہ کی ترقی کیلئے ہر ممکنہ اقدامات کا تیقن دیا۔انہوں نے کہا کہ ضلع میدک میں پیدا ہوا ہوں اور اس حلقہ کی ترقی کرنا میرا فرض ہے، اسکیم بھگیرتھا کے تحت حلقہ اسمبلی نارائن کھیڑ کے تمام مواضعات کو پینے کا پانی سربراہ کیا جائے گا۔ ایس ٹی تانڈوں کو گرام پنچایت کا درجہ آنے والے پنچایت الیکشن تک دیا جائے گا۔ مسلم اور ایس ٹی طبقہ کے عوام کو 12فیصد تحفظات سدھیر کمیشن رپورٹ آنے کے بعد دیئے جائیں گے، حلقہ اسمبلی نارائن کھیڑ کو آزادی کے بعد 40سال کانگریس، 20سال تلگودیشم نے حکومت کی لیکن افسوس کہ کچھ ترقی نہیں ہوئی جس کی وجہ سے یہ حلقہ اسمبلی تلنگانہ میں پسماندہ حلقہ ہے۔ تلنگانہ کے ہر حلقہ کی ترقی کیلئے تلنگانہ حکومت کوشش کررہی ہے۔ رمضان، کرسمس، بونال تہواروں کو حکومت کی جانب سے منایا گیا، انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ 12 فبروری کو حلقہ اسمبلی میں ہونے والے انتخابات میں کار کے نشان کو ووٹ دے کر ٹی آر ایس کے امیدوار ایم بھوپال ریڈی کو بھاری اکثریت سے منتخب کریں۔ اس جلسہ سے تلنگانہ ڈپٹی اسپیکر پدما دیویندر ریڈی، رکن پارلیمنٹ ظہیرآباد بی بی پاٹل، ضلع پریشد چیرمین رامن مری یادو، ارکان اسمبلی بابو موہن، رام لنگا ریڈی، چنتا پربھاکر، مہیپال ریڈی، مونی ریڈی ارکان قانون ساز راملو نائیک، بھوپال ریڈی، اسٹیٹ مائناریٹی  قائد ایم اے معید خان، ہوم منسٹر نرسمہا ریڈی، وزیر زراعت پوچارم سرینواس ریڈی، سرپنچ او شٹکار، اشوک شٹکار، محمد منور قریشی، عبدالرحیم چشتی، محمد غوث چشتی کے علاوہ دیگر نے مخاطب کیا۔

TOPPOPULARRECENT