Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / ناراض قائدین کی ہنگامہ آرائی اور گڑبڑ

ناراض قائدین کی ہنگامہ آرائی اور گڑبڑ

دو خواتین میں جھڑپ، مار پیٹ اوربیانرس پھاڑ دینے کے واقعات
حیدرآباد۔/20جنوری، ( سیاست نیوز) حکمراں ٹی آر ایس ، کانگریس ، بی جے پی اور تلگودیشم میں جی ایچ ایم سی انتخابات کیلئے بی فارمس نہ ملنے پر پارٹی اور قائدین کے خلاف احتجاج کیا گیا۔ گاندھی بھون میں دو خواتین نے آپس میں مارپیٹ کی۔ تلگودیشم ہیڈکوارٹر این ٹی آر بھون میں ناراض قائدین نے پارٹی کے بیانرس کو پھاڑدیا اور ٹکٹ فروخت کرنے کا پارٹی قائدین پر الزام عائد کیا۔ ملکاجگری کے علاوہ دسرے بلدی حلقوں میں ٹی آر ایس کے قائدین نے احتجاج کرتے ہوئے باغی امیدوار کی حیثیت سے انتخابی میدان میں رہنے کا اعلان کیا۔ 21جنوری پرچہ نامزدگی سے دستبرداری اختیار کرنے کا آخری دن ہے۔ جی ایچ ایم سی انتخابات کیلئے ہر پارٹی سے سینکڑوں کی تعداد میں قائدین نے اپنے اپنے پرچہ نامزدگیاں داخل کئے ہیں جو پارٹی قیادت کیلئے درد سر بنے ہوئے ہیں۔ تمام پارٹیوں کے سینئر قائدین ٹکٹ کے دعویداروں کو سمجھانے میں مصروف ہیں۔ فلک نما بلدی ڈیویژن کے بی فارم کیلئے آج گاندھی بھون میں ہنگامہ پیش آیا جس میں ٹکٹ کیلئے دعویدار دو خواتین نے گاندھی بھون پہنچ کر بی فارم حاصل کرنے کیلئے پارٹی قیادت پر دباؤ ڈالا اور اچانک یہ خواتین ایک دوسرے سے اُلجھ پڑی اور نوبت ہاتھا پائی تک پہونچ گئی۔ گاندھی بھون میں موجود کانگریس قائدین نے ان دونوں خواتین کو سمجھاتے ہوئے معاملہ رفع دفع کردیا۔ تلگودیشم کے ہیڈکوارٹر پر تلگودیشم کے محاذی طلبہ اور یوتھ تنظیموں کے قائدین نے احتجاج کرتے ہوئے تلگودیشم کے بیانرس اور پوسٹرس پھاڑ دیئے اور پارٹی آفس میں موجود قائدین سے اُلجھ پڑے۔ ملکاجگری کے علاوہ دوسرے حلقوں میں ٹکٹ نہ ملنے پر ٹی آر ایس قیادت سے ناراضگی کا اظہار کیا اور باغی امیدواروں کی حیثیت سے مقابلہ کرنے کا اعلان کیا۔ بی جے پی کے ٹکٹ سے محروم ہونے پر احتجاج کرتے ہوئے بی جے پی قائدین اور کارکنوں نے بی جے پی ہیڈکوارٹر پر توڑپھوڑ کی اور پارٹی قیادت کے خلاف نعرے لگائے۔

TOPPOPULARRECENT