Thursday , March 30 2017
Home / کھیل کی خبریں / ناصر حسین میرے دور کے بہترین کپتان : سچن

ناصر حسین میرے دور کے بہترین کپتان : سچن

’’کلارک نے نسبتاً کمزور آسٹریلیائی ٹیم کو ورلڈ کپ جتوایا ۔ جنوبی افریقہ کے گرائم اسمتھ بھی قابل تعریف‘‘
نئی دہلی، 17فبروری (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے سابق اسٹار بیٹسمن سچن تنڈولکر نے اپنے 24سال کے کرکٹ کریئر میں انگلینڈ کے سابق کپتان ناصر حسین کو اپنے وقت کا بہترین کپتان قرار دیا ہے ۔ سچن نے اپنی خودنوشت ’’پلے اِنگ اِٹ مائی وے ‘‘ میں اس کا انکشاف کرتے ہوئے لکھا، ’’میں نے جتنے بھی کپتانوں کے خلاف میچ کھیلا ہے ، ان میں ناصر سب سے اچھے کپتان رہے ۔ وہ ہمیشہ ہی ٹیم کیلئے بہترین حکمت عملی تیار کرتے تھے ۔ کرکٹ کے تئیں ان کی سوچ بہت اچھی رہتی تھی اور وہ اس کھیل کو بہت اچھے سے جانتے بھی تھے ۔ چینائی کی پیدائش والے ناصر نے 1989سے 2004ء تک انگلینڈ کیلئے 96 ٹسٹ اور 88 ونڈے کھیل چکے ہیں۔ اس دوران انہوں نے ٹسٹ میں 5764رن اور ون ڈے میں 2332رن بنائے ۔  ماسٹر بلاسٹر سچن نے کہا، ’’ناصر کبھی بھی ایسا نہیں کرتے تھے کہ کسی بلے باز نے کوئی ایک شاٹ کھیلا، تو اگلی گیند پر اس جگہ ایک فیلڈر لگایا ہو۔ وہ ہمیشہ ہی کوشش کرتے تھے کہ اگلی گیند پر اسی شاٹ کے چکر میں بلے باز سے غلطی کرائی جائے ‘‘۔ سچن نے ’’پلے انگ اٹ مائی وے ‘‘میں ناصر کے علاوہ 2015ء میں آسٹریلیا کو ورلڈ کپ جتوانے والے سابق کپتان مائیکل کلارک کو آسٹریلیا کی جانب سے اپنے کریئر کا سب سے بہتر کپتان بتایا۔43 سالہ ماسٹر بلاسٹر نے کہا، ’’بھلے ہی رکی پونٹنگ اور اسٹیو وا نے آسٹریلیا کیلئے بہت کچھ کیا ہے ، لیکن ان کے پاس ایسی ٹیم تھی، جو کبھی بھی میچ کو جیت سکتی تھی، اس لئے مجھے نہیں لگتا اس وقت آسٹریلیا کی ٹیم کیلئے کپتانی کی کوئی اہمیت تھی۔ ایلن بارڈر کی کپتانی کے وقت میں بہت چھوٹا تھا، اس لئے ان کی کپتانی کے بارے میں کچھ نہیں کہنا چاہوں گا۔‘‘ ٹسٹ کرکٹ میں 200 میچ کھیلنے کے بعد 2013ء میں انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لینے والے سچن نے جنوبی افریقہ کے سابق کپتان گرائم اسمتھ کی بھی تعریف کرتے ہوئے کہا، ’’جس طرح سے22 سال کی عمر میں اسمتھ نے جنوبی افریقہ کی ٹیم کو سنبھالا وہ آسان نہیں تھا۔ مجھے لگتا ہے گرائم اسمتھ بھی کپتانی کے معاملے میں بہت اوپر ہے‘‘ ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT